صارفین کو ڈیڈکشن بلز بھیجنا عوام دشمنی کے مترادف ہے ،عامر فاروقی

81

سکھر (نمائندہ جسارت)نشتر روڈ انجمن تاجران اینڈ جنرل مرچنٹ سکھر کے صدر محمد عامر فاروقی نے سیپکو کی جانب سے عدالتی احکامات کے باوجود گھریلو اور تجارتی صارفین کو بھیجے گئے ڈیڈکشن بلز کو عوام دشمنی قرار دیتے ہوئے اس کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان سمیت دیگر بالا حکام سے سکھر کے شہریوں اور تاجروں کیساتھ سیپکو کی زیادتیوں کا از خود نوٹس لینے کاپرزور مطالبہ کیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے تاجر سیکرٹریٹ نشتر روڈ میں میں ڈیڈکشن بلز سے پریشان حال تاجروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر سینئرنائب صدرحاجی عبدالعزیز ہاشمانی، نائب صدر محمد انیس شمسی ، جنرل سیکرٹری شیخ محمد اسلم ، جوائنٹ سیکرٹری اول محمد احسان ملک ، جوائنٹ سیکرٹری دوم حاجی مناف میمن ، خازن اول نذیر میمن ،خازن دوم اشوک کمار ، سیکرٹری لیگل ایڈ ، محمد کامران شمسی ، سیکرٹری اطلاعات عزیر السلام سمیت اراکین ورکنگ کمیٹی کے اراکین بھی موجود تھے۔ محمد عامر فاروقی و دیگر عہدے داروں کا کہنا تھا کہ سیپکو نے عوام کے ساتھ ظلم کی انتہا کردی ہے،گھریلو ، تجارتی مراکز کے بعد اب مساجد اور مدارس کو بھی ڈیڈکشن بل بھیجے جا رہے ہیں جو انتہائی افسوسناک عمل ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے ۔ صدر محمد عامر فاروقی کا مزید کہنا تھا کہ سندھ ہائی کورٹ نے دائر ایک آئینی پٹیشن کی سماعت پر احکامات دیے تھے کہ سیپکوکو ڈیڈکشن لگانے کے اختیارات نہیں ہیں لیکن سیپکو نے عدالتی احکامات بھی ہوا میں اڑا دیے ہیں سیپکو کے نااہل اور کرپٹ افسران اپنی جیبیں بھرنے کے لیے عوام کو پریشان کرنا شروع کر رکھا ہے،بارہ بارہ گھنٹوں کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے کاروبار تباہ کر رکھا ہے ہزاروں روپے کے ناجائز بل کے بعد تاجروں کو ڈیڈکشن بلز کا اجرا سمجھ سے بالا تر ہے۔رہنماؤں نے چیف جسٹس آف پاکستان سمیت دیگر بالا حکام سے اپیل کی ہے کہ توہین عدالت کرنے والے سیپکو افسران اور عملے کی زیادتیوں کا نوٹس لیتے ہوئے غیر قانونی اور بلاجواز لگائے جانے والے ڈیڈیکشن بلز فوری ختم کر کے عوام کو دہرے عذاب سے بچایا جائے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ