حیدرآباد، بااثر افراد اور پولیس زیادتیوں کیخلاف شہری سراپا احتجاج

51

حیدرآباد(نمائندہ جسارت) بااثر افراد اور پولیس اہلکاروں کی زیادتیوں کے خلاف حیدرآباد پریس کلب کے سامنے احتجاج کا سلسلہ جاری رہا اور گوٹھ سید قاسم شاہ ضلع نواب شاہ کے رہائشی سید غلام حیدر شاہ نے بااثر افراد کی زیادتیوں کے خلاف حیدرآبادپریس کلب کے سامنے احتجاج کرتے ہوئے حکام بالا سے مطالبہ کیا ہے کہ میرے مغوی بیٹے کو بازیاب کراکے میری زرعی زمین پر قبضہ کرنے والوں کو گرفتار کیاجائے۔ انہوں نے بتایا کہ دس ماہ قبل ملزمان جام چنگیز انڑ، امام علی کلیار، محمود مہر نے میرے 17سالہ بیٹے سید رحیم شاہ کو اغوا کرکے مجھ سے پانچ لاکھ روپے تاوان طلب کیا اور میری125 ایکٹر زرعی زمین پر قبضہ رکھا ہے، مجھے انصاف اور تحفظ فراہم کیاجائے بیٹے کو بازیاب کرایاجائے۔سکرنڈ کے گوٹھ صوفی ڈاہری کے رہائشی اللہ ڈنو ڈاہری نے اپنے رشتہ داروں کے خلاف حیدر آبادپریس کلب کے سامنے احتجاج کرتے ہوئے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ ملزمان کے خلاف قانونی کارروائی کرکے مجھے انصاف اور تحفظ فراہم کیاجائے۔ انہوں نے بتایا کہ میرے رشتے داروں محمد خان ڈاہری،قربان ڈاہری ودیگر میرے پلاٹ پر زردستی قبضہ کرنا چاہتے ہیں اس پر تعمیرات بھی کرلی ہے جبکہ میں نے پلاٹ کا قبضہ مانگا تو مجھے قتل کی دھمکیاں دے رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ دھمکیوں کے بعد میں نے حیدرآباد کے علاقے حسین آباد میں رہائش اختیار کرلی ہے۔ شیخ بھرکیو ٹنڈو محمد خان کے رہائشی افراد مرد، خواتین اور بچوں نے ٹنڈو محمد خان پولیس کیخلاف احتجاج کرتے ہوئے کہاکہ ہمارے گھروں میں چوری کرنے والے چوروں کو فی الفور گرفتار کرکے ہمیں تحفظ دیاجائے ۔اس موقع پر چیتن کوہلی، ویری کولہی اور مورو دیگر نے بتایا کہ پانچ روز قبل ہمارے گھروں میں 6 افراد داخل ہوئے اور گھروں سے نقد رقم ،موبائل فون ودیگر چیزیں لے گئے، جب اس کی رپورٹ درج کرانے تھانے پہنچے تو پولیس نے مقدمہ درج کرنے سے انکار کردیا۔ انہوں نے حکام بالا سے کہاکہ پولیس ملزمان کے ساتھ ملی ہوئی ہے لہٰذا فوری انصاف دیاجائے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ