سی پیک اور ڈیم منصوبے ملک کییلیے ضروری ہیں، طاہر مجید

26

حیدرآباد(نمائندہ جسارت)امیرجماعت اسلامی ضلع حیدرآبادحافظ طاہرمجیدنے کہاہے کہ سی پیک اورڈیم منصوبے ملک کے لیے ضروری ہیں لیکن پالیسی مستقل اورقومی مفادات پر مبنی ہونی چاہیے ۔انہوں نے کہاکہ سی پیک معاشی حالات بدلنے کاایک عظیم منصوبہ ہے ۔ اس پر بات چیت کے لیے پارلیمان کاادارہ بہتر ہے کسی مشیر اورحکومت کوتنہاپروازنہیں کرنی چاہیے ۔پاک چین اقتصادی راہداری کے لیے وفاقی حکومت کوچاہیے کہ سی پیک میں پاکستانی لیبر اورمقامی اشیاء استعمال میں لائے جائیں ،ٹیکنیکل اسٹاف کے لیے چین سے اپنے لوگوں کی تربیت کابندوبست ہوناچاہیے اور ٹرانٖسفرآف ٹیکنالوجی ہوناچاہیے تاکہ مستقبل میں اس سے خاطر خواہ فائدہ اٹھایاجاسکے۔ انہوں نے کہاکہ کسی بھی منصوبے کے لیے سودی قرضہ اپنی خودمختاری کوگروی رکھوانے کے مترادف ہے۔حکومت کوقومی مفادات پر مبنی پالیسی اختیارکرناچاہیے ۔انہوں نے مزیدکہاکہ ملک میں پانی کی قلت سے کسی کوانکارنہیں ہے پانی کاضائع ہونانقصان دہ ہے ۔چھوٹے بڑے ڈیم سمیت آبی ذخائر وقت کی ضرورت ہے لیکن حکومت کامحض چندے پر انحصارکرنادانش مندی نہیں ہے اس کے لیے مستقل پالیسی اپنانے کی ضرورت ہے۔قومی معاشی پالیسی اختیارکی جائے، بیرونی قرضوں اوراشیائے تعیشات پرپابندی،ٹیکس چوری روکنااوراس کادائرہ کاربڑھانا، کرپشن کی روک تھام ،لوٹی ہوئی دولت کی واپسی اور انتظامی اخراجات میں کمی کے ذریعے بہت سے معاشی منصوبے مکمل ہوسکتے ہیں۔حکومت عارضی اورقومی مفادات سے عاری پالیسی کے بجائے مستقل اورٹھوس پالیسی اپنائے ۔انہوں نے مزیدکہاکہ کسی کام کی ابتداحکمران طبقہ ،اراکین اسمبلی اور مقتدر شخصیات کریں توعوام بھی پیچھے نہیں رہیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ