چیف جسٹس کا منرل واٹر کمپنیوں کے فرانزک آڈٹ کا حکم

126

چیف جسٹس پاکستان نے منرل واٹر کمپنیوں کے فرانزک آڈٹ کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ پندرہ روز میں آڈٹ کرکے رپورٹ پیش کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق منرل واٹر فروخت کرنے والی کمپنیوں سے متعلق از خود نوٹس پر سماعت ہوئی۔ سماعت میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے ہدایت کی کہ پاکستان کی بڑی منرل واٹر کمپنیوں کے پانی کے نمونے چیک کئے جائیں۔ آڈٹ کے بعد دیکھا جائے گاکہ حکومت کو پانی کی کتنی ادائیگی کرنی ہے۔

سماعت میںچیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بیس سال سے منرل واٹرکمپنیاں صرف نفع ہی کما رہی ہیں ،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ وقت آگیا ہے جو قوم نے ہمیں دیا اسے لوٹانا ہے۔ لوگوں میں احساس ہے کہ اب انہیں پوچھا جاسکتا ہے۔ کیس کے بعد کمپنیاں مناسب ریٹ رکھیں گی۔

منرل واٹرکمپنیوں نےآڈٹ کیلئے ایک ماہ کی مہلت مانگی جسے عدالت نے مسترد کرتے ہوئے پندرہ روز میں منرل واٹر کمپنیوں کے فرانزک آڈٹ کرکے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کردی۔

چیف جسٹس نے کہا کہ پانی ایک ایسا معاملہ ہے جسے ہرگز نظر انداز نہیں کیا جاسکتا اب بڑی سوسائٹیز کا نمبر آنا ہے جو ٹیوب ویل لگا کر پوری قیمت لیتی ہیں۔ پوری قیمت لیکر بھی حکومت کو ایک پیسہ تک نہیں دیتیں،چیف جسٹس نے کہا کہ آئندہ ہفتے سوسائٹیوں میں پانی کی فراہمی سے متعلق سماعت ہوگی

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.