یوریا بنانے کے لیے2 کھاد کارخانوں کو ایل این جی کی فراہمی شروع

54

اسلام آباد( آن لائن )وفاقی حکومت نے کھاد کے کارخانوں کو ایل این جی کی فراہمی شروع کردی ہے۔ پہلے مرحلے میں فاطمہ فرٹیلائزر اور ایگری نیٹ کو ایل این جی کی فراہمی شروع کی گئی ہے۔ دونوں کارخانے 38فیصد ایل این جی اور 62فیصد سسٹم گیس استعمال کریں گے ۔حکام کے مطابق ملک میں ربیع سیزن میں کھاد کی ضرورت پوری کرنے کے لیے گیس فراہم کی جارہی ہے تاہم پھربھی حکومت
نے ایک لاکھ ٹن یوریا کھاد درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایل این جی کی 50 فیصد ادائیگی حکومت کرے گی جبکہ 50 فیصد ادائیگی کھاد فیکٹری مالکان کریں گے ۔ حکام کا کہنا ہے کہ دونوں کھاد کارخانوں کو 2 ماہ پہلے ایل این جی استعمال کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ کھاد کارخانوں کے مالکان نے حکومت سے عہد لیا تھا کہ اگر ان کو گیس فراہم کی جائے تو 5 لاکھ ٹن یوریا کھاد پاکستان میں ہی تیار کی جائیگی جبکہ باقی ایک لاکھ ٹن کھاد درآمد کی جائیگی ۔ واضح رہے کہ پاکستان کی ربیع سیزن میں کھاد کی ڈیمانڈ 6 لاکھ ٹن ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.