عدالت عظمیٰ کا پمز اسپتال کے زیر التوا مقدمات کا 3 ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم

14

اسلام آباد (آن لائن) عدالت عظمیٰ نے پمز اسپتال کے سول عدالتوں میں زیر التوا مقدمات کا3 ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ جمعے کوعدالت عظمیٰ میں پمز اسپتال میں تقرریوں سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں3 رکنی بینچ نے کی۔ دوران سماعت چیف
جسٹس نے پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (پمز ) کے حکام سے سوال کیا کہ کیا معاملات زیر التوا رہ گئے ہیں جس پر ایگزیکٹو ڈائریکٹر پمز ڈاکٹر امجد نے عدالت کو بتایا کہ مختلف عدالتوں میں سول مقدمات زیر التوا ہیں، جس کا کنٹریکٹ ختم ہو جاتا ہے وہ جا کر حکم امنتاع لے آتا ہے۔ لیڈی ڈاکٹر پر تشدد کرنے والے2 ملزمان ابھی تک گرفتار نہیں ہو سکے۔گرفتار کیے گئے2 افراد کی ضمانت ہو چکی ہے۔ چیف جسٹس نے اے آئی جی کوپیرکو چیمبر میں طلب کر تے ہوئے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.