میڈیا ہاؤس پر پابندی آزادی صحافت پر قد غن کے مترادف ہے،سی بی اے

30

حیدرآباد(نمائندہ جسارت)میڈیا ہاؤس کے نمائندگان و کارکنان کی اداروں سے جبری بے دخلی اور ملازمت کا خاتمہ ظلم و زیادتی ہے ، میڈیا ہاؤس پر بے جا پابندی آزادی صحافت پر قد غن کے مترادف ہے ۔ جمہوری ادوار میں رائے عامہ کی آزادی جمہوریت کا حسن ہوتا ہے ۔ نیز مقامی روزنامہ اخبار کے مالک کے خلاف مقدمات کا خاتمہ کرکے انصاف کے تقاضوں کو پورا کیا جائے ۔ان خیالات کا اظہار آل پاکستان واپڈا ہائیڈرو الیکٹرک ورکرز یونین (CBA) کے صوبائی ترجمان نے اپنے ایک بیان میں کیا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ میڈیا ہاؤس میں جبری ڈاؤن سائزنگ کا عمل کسی طور بھی احسن اقدام نہیں ہے اس عمل سے جہاں بے روزگاری پروان چڑھے گی وہیں میڈیا کے نمائندگان و کارکنان کو دباؤ میں رکھنے کا جواز بھی بنے گا جو سراسر آزادی صحافت پر حملے اور اس قدغن لگانے کے مترادف ہوگا۔ اسی طرح بعض میڈیا ہاؤس پر جمہوریت ہوتے ہوئے بے جا پابند یاں عائد کرنا بھی جمہوریت کے حسن کو بگاڑنے والی بات ہے الحمد اللہ آج ملک عظیم میں جمہوری عمل آگے بڑھ رہا ہے اقتدار کی منتقلی مکمل ہوچکی ہے اور سب طاقتیں ایک صفحے پر آکر کام کررہی ہیں ایسے میں میڈیا ہاؤس کے نمائندگان و کارکنان کی جبری بے دخلی کو اچھا عمل کرار نہیں دیا جاسکتا ۔ جمہوریت کا تو حسن ہی یہی ہے کہ ہر ایک کو اپنے اپنے دائرے میں کام کرنے کا موقع فراہم کیا جائے ۔ نیز انہوں نے حیدرآباد کے قدیمی مقامی روزنامے کے مالک کے خلاف مقدمات کے اندراج کو بھی درست اقدام نہیں کہا جاسکتا ہے کیونکہ یہ اخبارات ہی تو ہیں جو عوام کی آواز کو نہ صرف اپنے اخبار میں جگہ دیتے ہیں بلکہ اپنے اخبار کی وساطت سے مقتدر ایوانوں تک رسائی کا ذریعہ بنتے ہیں لہٰذا مقامی روزنامے کو مالک کو ہراساں کرنے کے بجائے انصاف کے تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے آزادی صحافت کو پابند سلاسل نہ کیا جائے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.