مقبوضہ کشمیر: حریت کارکن اور نوجوانوں کی شہادت پر ہڑتال

35

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ایجنٹوں کے ہاتھوں تحریک حریت جموں وکشمیر کے رکن حکیم الرحمان اور قابض فوج کی جانب سے محاصرے اور تلاشی کی کارروائی کے دوران 2جوانوں کے قتل کے خلاف جمعہ کو سوپور قصبہ اور اس کے ملحقہ علاقوں میں مکمل ہڑتال کی گئی۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق حکیم الرحمان کو 8ستمبر کو سوپور کے علاقے بومئی میں اپنے گھر کے باہر گولی مار کر شہید کر دیا گیا تھا جبکہ بھارتی فوجیوں نے 2 نوجوانوں کو گزشتہ روز آرم پورہ سوپور میں محاصرے اورتلاشی کی کارروائی کے دوران شہید کیا ۔ہڑتال کی کال سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل حریت قیادت نے دی تھی۔ دکانیں، کاروباری مراکز اور پیٹرول پمپ بند تھے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک معطل ہے ۔ قابض انتظامیہ نے نوجوانوں کی شہادت پر احتجاجی مظاہرے روکنے کے لیے سوپور میں بڑی تعداد میں بھارتی فوجی اور پولیس اہلکار تعینات کر رکھے تھے۔ انتظامیہ نے طلبہ کو مظاہروں سے روکنے کے لیے سوپور سب ڈویژن میں تمام تعلیمی ادارے بھی بند کر دیے تھے۔ قابض انتظامیہ کی پابندیوں کے باوجود آرم پورہ سوپورمیں لوگ احتجاج کے لیے سڑکوں پر نکل آئے اور بھارت کے خلاف او ر آزادی کے حق میں نعرے لگائے ۔ قابض فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کی شدید شیلنگ کی جس کے بعد مظاہرین اور فورسز اہلکاروں کے درمیان جھڑپیں شروع ہو گئیں۔ اطلاعات کے مطابق قابض فورسز کی طرف سے طاقت کے وحشیانہ استعمال کے نتیجے میں متعدد نوجوان زخمی ہو گئے ہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.