نواز شریف کے مشکل میں آتے ہی دہشت گردی شروع ہوجاتی ہے،عمران خان

124

اسلام آباد(آن لائن،صباح نیوز)پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ یہ کیسا اتفاق ہے کہ جب نواز شریف مشکل میں آتے ہیں تو سرحدی کشیدگی بڑھتی ہے اور دہشت گردی کے واقعات میں اضافہ ہوجاتا ہے۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ہم یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ جب بھی سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف مشکل کا شکار ہوتے ہیں تو پاکستان کی سرحد پر کشیدگی میں اضافہ کیوں ہوتا ہے اور ملک کے اندر دہشت گردی کے واقعات شروع کیوں ہوجاتے ہیں؟تحریک انصاف کے سربراہ نے مزید سوال کیا کہ کیا یہ محض اتفاق ہے؟۔عمران خان کا کہنا تھا کہ ایسا محسوس ہورہا ہے کہ 25 جولائی کے انتخابات کو سبوتاژ کرنے کے لیے کسی سازش کا ڈول ڈالا جارہا ہے۔چیئرمین پی ٹی آئی کا مزید کہنا تھا کہ عوام ایسی کسی بھی سازش کو 25 جولائی کو ہونے والے تاریخی انتخابات کی راہ میں حائل ہونے کی اجازت نہیں دیں گے۔علاوہ ازیں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات میں فتح کا مکمل یقین ہے۔ چین کی طرح غربت میں کمی کے پروگرام پر عمل کیا جائیگا،کرپٹ سیاستدانوں کیخلاف ہر مرتبہ احتساب کا عمل روکا گیا۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کو انٹرویو کے دوران عمران خان نے کہا کہ کرپٹ سیاستدانوں کے خلاف ہر مرتبہ احتساب کا عمل روکا گیا تاہم اب عوام سیاسی جماعتوں کے کرپٹ سربراہان کے احتساب کا مطالبہ کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم بننے کے بعد انسداد کرپشن مہم کے اپنے وعدوں کا جزوی نمونہ پیش کروں گا اور چین کی طرح غربت میں کمی کے پروگرام پر عمل کیا جائے گا۔عمران خان نے کہا کہ پاکستان کو غربت کے خاتمے کے لیے چین کی مثال اپنانی چاہیے اور اس سلسلے میں ہم نے چینی حکام سے ملاقاتیں کی ہیں۔عمران خان نے انتخابی مہم میں سازگار ماحول فراہم کیے جانے کے الزام کی تردید کی اور کہا کہ وہ انتخابات میں کامیابی کے لیے پرامید ہیں اور ابھی میچ ختم نہیں ہوا جب تک آخری بال نہ ہو۔ افغانستان کی صورتحال پر بات کرتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ امریکی فوج جتنا عرصہ افغانستان میں رہیں گی سیاسی مصالحت کے مواقع اتنے ہی کم ہوں گے۔پاکستان مسلم لیگ (ن) کے گڑھ بہارہ کہو میں الیکشن مہم کے لیے پہلے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ گورنمنٹ سکول کی حالت سب کے سامنے ہے جہاں عام افراد کے بچے پڑھ کر کبھی بھی اوپر نہیں آسکتے۔ ہم ان کی حالت زار ایسی بنائیں گے کہ غریبوں کے بچے امیروں کے بچوں کے ساتھ بیٹھ کر کوئز اور دیگر مقابلوں میں حصہ لیا کریں گے۔ نوجوانوں کا سب سے بڑا مسئلہ بے روزگاری ہے اور اس کے خاتمہ کے لیے بہترین پروگرام بنایا ہے۔ اچھی تعلیم کے لیے ٹیکنیکل انسٹیٹیوٹ نہ صرف کھولے جائیں گے بلکہ ان انسٹیٹیوٹ سے فارغ التحصیل بچے کبھی بھی بے روزگار نہیں رہ سکیں گے اور میں وعدہ کرتا ہوں کہ ملک کا تین سو ارب لوٹنے والے جیسا نہیں بنوں گا ۔سرکاری ہسپتالوں کی حالت بہتر بنانے کے لیینہ صرف دن رات کام کریں گے جہاں عام عوام کا علاج بہتر اور معیاری ہوگا۔ ایسے ہسپتال کی تعمیر اولین فریضہ سمجھوں گا۔ انہوں نے خطاب کے دوران کہا کہ پانچ پانچ باریاں لینے والوں کے دھوکے میں کبھی نہ آنا۔ بہارہ کہو والو حضور پاکؐ کا فرمان ہے کہ مومن کبھی ایک سوراخ سے دو بار نہیں ڈسا کرتا اور آپ لوگ کئی بار نہ صرف ڈسے ہو بلکہ زخمی ہوئے ہو۔ ملک چھ ہزار ارب قرضہ کے بوجھ تلے دبا ہے جو کہ اب 27 ہزار ارب ڈالر تک پہنچ گیا ہے روپے کی قدر گرا دی گئی اور غریبوں کے پاس جو پیسہ تھا وہ کم ہوتا ہوتا آدھے سے بھی کم رہ گیا۔ میں عمران خان آج آپ کے سامنے ہوں جس کو سپریم کورٹ آف پاکستان نے صادق اور امین قرار دیا ہے۔ سب سے پہلے کرپشن خاتمہ اولین ترجیح ہے بعد ازاں ملک کے قرضے اتارنے کے لیے دن رات ایک کروں گا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ