مصری حکومت اسرائیل سے گیس درآمد میں فریق نہیں‘ سیسی کی وضاحت

130
قاہرہ: مصری کمپنی اور اسرائیل کے مابین گیس معاہدے سے پر ایک عرب کارٹونسٹ کا دلچسپ ردعمل
قاہرہ: مصری کمپنی اور اسرائیل کے مابین گیس معاہدے سے پر ایک عرب کارٹونسٹ کا دلچسپ ردعمل

قاہرہ (انٹرنیشنل ڈیسک) مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے کہا ہے کہ ان کی حکومت اسرائیل کے ساتھ طے شدہ گیس معاہدے میں فریق نہیں ہے ۔قاہرہ میں سرمایہ کاروں کے لیے مختلف سروس سنٹرز کے افتتاح کے موقع پرانہوں نے وضاحت کی کہ مصری حکومت ایک نجی کمپنی کے اسرائیل سے قدرتی گیس کی درآمد کے معاہدے میں بالکل بھی فریق نہیں ہے ۔صدرسیسی کا کہنا تھا کہ مصر کچھ بھی چھپانا نہیں چاہتا ہے اور جو کچھ طے پایا ہے ، وہ مصر سے تعلق رکھنے والی ایک نجی کمپنی اور اسرائیل کے درمیان ایک معاہدہ ہے۔ (باقی صفحہ 9 نمبر 16) واضح رہے کہ اسرائیل نے مصر کی ایک نجی کمپنی’ڈولفینس ہولڈنگز‘ کے ساتھ آیندہ10 سال تک15 ارب ڈالر کے عوض گیس برآمد کرنے کے ایک معاہدے کا اعلان کیاتھا ۔دوسری جانب مصرکی وزارت پیٹرولیم کے ترجمان حامد عبدالعزیز کا کہنا ہے کہ اگر مصری حکومت اسرائیل سے گیس درآمد کرنے کے اس معاہدے کی منظوری دے دیتی ہے، تو اس سے فریق دونوں نجی کمپنیاں گیس پائپ لائنز کے مقامی نیٹ ورک کو استعمال کرسیکیں گی ۔اس علاوہ مصر میں قدرتی گیس کو مائع گیس میں تبدیل کرنے کے اسٹیشنبھی قائم ہوسکیں گے ۔
مصر/گیس درآمد