فرانس کا مہاجرین سے متعلق قوانین سخت کرنے کا فیصلہ

68
فرانس/سخت قوانین پیرس: فرانسیسی دارالحکومت میں مہاجرین سیاسی پناہ کی درخواست دینے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں، چھوٹی تصویر میں صدر میکروں تارکین وطن سے متعلق اجلاس میں موجود ہیں
فرانس/سخت قوانین پیرس: فرانسیسی دارالحکومت میں مہاجرین سیاسی پناہ کی درخواست دینے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں، چھوٹی تصویر میں صدر میکروں تارکین وطن سے متعلق اجلاس میں موجود ہیں

پیرس (انٹرنیشنل ڈیسک)فرانسیسی حکومت مہاجرین کے حوالے سے سخت قوانین متعارف کرانے کا اعلان کردیا۔اس نئے منصوبے کے تحت مہاجرین سے متعلق ملکی قوانین میں سختی لائی جائے گی ،جب کہ غیرقانونی طور پر ملک میں داخل ہونے والوں کو زیادہ عرصے تک حراست میں رکھا جائے گا۔دوسری جانب فرانسیسی حکومت کے اس منصوبے کو تارکین وطن کی امداد کرنے والی تنظیموں کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے، جب کہ فرانس کے جنرل انسپکٹر جیل خانہ جات نے بھی ملک میں حراستی مراکز کی ناگفتہ بہ صورت حال کے تناظر میں منصوبے کی مخالفت کی ہے ۔اس سے پہلے فرانسیسی صدر میکروں کئی مرتبہ (باقی صفحہ 9 نمبر 22) کہہ چکے ہیں کہ حق دار تارکین وطن کو فرانس میں خوش آمدید کہا جاتا رہے گا، تاہم سیاسی پناہ کے ناکام درخواست گزاروں اور غیرقانونی طور پر ملک میں پہنچنے والوں کی حوصلہ شکنی کے لیے کڑے اقدامات بھی اٹھائے جائیں گے ۔