پشاور:ڈائریکٹریٹ زراعت پر دہشت گردانہ حملہ،9 افراد جاں بحق، 38 زخمی

345

پشاور میں یونیوسٹی روڈ پر واقع ڈائریکٹوریٹ زراعت پر دہشت گرد حملے کے نتیجے میں نو افراد جاں بحق اور 38 زخمی ہو گئے جبکہ جوابی کارروائی میں 4 دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق پشاور میں زرعی یونیورسٹی کے قریب واقع ڈائریکٹوریٹ جنرل زراعت خیبرپختونخوامیں مسلح افراد نے دھاوا بول دیا اور اندر داخل ہوکر فائرنگ شروع کردی۔واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس،فوج اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کی بڑی تعداد جائے وقوع پر پہنچ گئی جبکہ یونیورسٹی روڈ اور اطراف کی سڑکوں کو ٹریفک کے لیے بند کرکے آپریشن شروع کردیا ۔حملے میں 9 افراد شہید اور 38 زخمی ہوگئے۔

زخمیوں کوطبی امداد کیلئے مختلف اسپتالوں میں منتقل کیا گیا جن میں پاک فوج کے دو جوان، دو پولیس اہلکار، دو طالب علم اور دو گارڈز شامل ہیں جن میں سے ایک کی حالت تشویش ناک بتائی جارہی ہے۔ خیبرٹیچنگ ہسپتال میں تین لاشیں اور 17 زخمی لائے گئے جن میں سے دو سکیورٹی اہلکاروں کوابتدائی طبی امداد کے بعد سی ایم ایچ منتقل کر دیا گیا،ہسپتال میں زیر علاج زخمیوں میں سے جن میں طالبعلم ، محکمہ زراعت کے اہلکار اور پولیس اہلکار شامل ہیں ۔ حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں 4افراد کی لاشیں موجود اور 21 زخمی زیر علاج ہیں۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق زرعی یونیورسٹی ڈائریکٹوریٹ پشاور پر حملہ کرنے والے تمام دہشت گرد جوابی کارروائی میں مارے گئے ہیں۔آئی ایس پی آر کا مزید کہنا تھا کہ ہاسٹل میں موجود 8 طلبہ کو بحفاظت نکال کر محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ کلیئرنس آپریشن کرتے ہوئےدہشت گردوں سے بڑی تعداد میں اسلحہ بھی برآمد ہوا، جس میں12 دستی بم،3 کلاشنکوف، پستول، خودکش جیکٹس اور بارودی مواد شامل ہے۔

ایس ایس پی آپریشن پشاور سجاد خان نے کہا ہے کہ  دہشت گرد جنھوں نے شٹل کاک برقعے پہن رکھے تھے اور رکشے میں سوا ر ہو کر ڈائریکٹریٹ زراعت تک پہنچے تھے جمعہ کی صبح ڈائریکٹریٹ کی عمارت میں داخل ہوئے اور فائرنگ شروع کر دی ،حملے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور سکیورٹی فورسز کے جوان فوری طور پر جائے وقوعہ پہنچے اور دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کا آغاز کر دیا ۔

انہوں نے کہا کہ سکیورٹی فورسز نے جوابی کارروائی میں4 دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا ، دہشت گردوں کے قبضے سے خودکش جیکٹس ، دستی بم اور آئی ای ڈیز بھی ملی ہیں اور ان کے پاس موجود اسلحے سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ وہ بہت بڑی کارروائی اور بڑے نقصانات کی نیت سے آئے تھے تاہم بروقت آپریشن کی وجہ سے وہ اپنے اصل مقاصد میں کامیاب نہیں ہو سکے۔