ملک گیر ہڑتال آج ہوگی‘ دھرنا قائدین۔ کاروبار اور ٹرانسپورٹ بند نہیں کرانے دینگے‘ رینجرز

313
اسلام آباد: اختیارات سپرد کیے جانے کے بعد رینجرز اہلکار دھرنے کے مقام پر الرٹ کھڑے ہیں
اسلام آباد: اختیارات سپرد کیے جانے کے بعد رینجرز اہلکار دھرنے کے مقام پر الرٹ کھڑے ہیں

اسلام آباد/کراچی(نمائندہ جسارت+اسٹاف رپورٹر)تحریک لیبک یا رسول اللہ کے قائدین نے کہا ہے کہ ملک گیر ہڑتال آج ہوگی جب کہ رینجرز حکام نے خبردار کیا ہے کہ کاروبار اور ٹرانسپورٹ بند کرانے والے عناصر کے خلاف سختی سے نمٹا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق نمائش چورنگی پر جاری دھرنے سے تحریک لیبک کے رہنما علامہ رضی حسینی ، مولانا بلال غازیانی ، صوفی محمد یحیٰ قادری اور محمد علی قادری نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے تاجر تنظیموں ، ٹرانسپورٹرز ، انجمنوں ، مزدور تنظیموں اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ آج تحفظ ناموس رسالت کے لیے اپنا کاروبار اور معمولات زندگی بند رکھیں اور بتائیں کہ پاکستان اسلام کے نام پر قائم ہوا ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری ہڑتال مکمل طور پر پرامن ہوگی ، آج کراچی کے ہر گلی محلے میں وفاقی حکومت کے خلاف بھرپور احتجاجی مظاہرے اور دھرنے بھی دیے جائیں گے، ہم علامہ خادم حسین رضوی کے مطالبات کی حمایت کرتے ہیں۔ دوسری جانب رینجرز نے تاجروں اور ٹرانسپورٹروں پر زوردیا کہ وہ ہڑتال کی کال کو نظرانداز کریں اور معمولات زندگی کو بحال رکھیں ۔ رینجرز نے خبردار کیا کہ زبردستی ہڑتال کرانے والے عناصر سے سختی سے نمٹا جائے گا۔ علاوہ ازیں اتوار کو کراچی میں 18مقامات پر دھرنے دیے گئے جن میں سہراب گوٹھ ‘ الآصف اسکوائر ‘ ناگن چورنگی ‘ اورنگی ٹاؤن ، لیاقت آباد،بلدیہ ٹاؤن، لانڈھی، کورنگی، شاہ فیصل کالونی، ملیر، ناظم آباد، کورنگی ڈھائی ، کورنگی نمبر5، ڈرگ روڈ ، سعود آباد، کھارادر، ٹاور شامل ہیں۔ سہراب گوٹھ پر دھرنے کے باعث ٹرک، ٹرالرز اور ٹینکرز کی لمبی قطاریں لگ گئی ہیں جب کہ صدر میں پارکنگ پلازہ کے قریب نامعلوم افراد نے ٹھیلوں کو آگ لگادی ہے۔ سعود آباد پولیس نے ہنگامہ آرائی اور جلاؤ گھیرا ؤکے الزام میں 35 افراد کو حراست میں لے کر مقدمہ نامعلوم ملزمان کے خلاف درج کرلیا۔دوسری جانب آپریشن میں جاں بحق افراد کی نماز جنازہ راولپنڈی میں ادا کردی گئی ۔ اس موقع پر حکومت کے خلا ف نعرے لگائے گئے۔