ایچ ای سی کی طرح پرائمری ایجوکیشن کمیشن بھی بنایا جائے، خورشید شاہ

149
اپوزیشن رہنما خورشید احمد شاہ،ہمدرد یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر شبیہ الحسن اور رجسٹرار پروفیسر ولی الدین سلور جوبلی کی افتتاحی تقریب سے مدینہ الحکمہ میں خطاب کر رہے ہیں
اپوزیشن رہنما خورشید احمد شاہ،ہمدرد یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر شبیہ الحسن اور رجسٹرار پروفیسر ولی الدین سلور جوبلی کی افتتاحی تقریب سے مدینہ الحکمہ میں خطاب کر رہے ہیں

کراچی(اسٹاف رپورٹر)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سیدخورشیداحمد شاہ نے کہا ہے کہ ہائرایجوکیشن کمیشن کی طرح پرائمری ایجوکیشن کمیشن بھی بنایا جائے، پرائمری ایجوکیشن تعلیم کی نرسری ہے، اس کو مضبوط کیے بغیر ملک میں اعلیٰ تعلیم مضبوط نہیں ہوسکتی اور تعلیم کو موثر و مستحکم کیے بغیر ملک ترقی نہیں کر سکتا۔ وہ گزشتہ روز مدینتہ الحکمت میں ہمدرد یونی ورسٹی کی سلور جوبلی کی افتتاحی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تعلیم محض ڈگری حاصل کرنے کا نام نہیں بلکہ علم (نالج) کا نام ہے، اگر نالج نہیں تو کوئی فائدہ نہیں جس طرح جو بھینس دودھ نہ دے وہ بیکار ہے، تعلیم و تربیت کا روح اور جسم جیسا تعلق ہے، اگر تربیت نہ ہو تو تعلیم بے روح جسم ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمدرد یونی ورسٹی میں تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیت کا بھی اہتمام کیا گیا ہے، اس کے بانی شہید حکیم محمد سعید ایک عظیم محب وطن اورنفیس انسان تھے، اللہ تعالیٰ نے انہیں دو زندگیاں عطا کی ہیں ایک شہید کی زندگی کیونکہ شہید مرتا نہیں ہے اور ان کی دوسری زندگی ہمدرد یونی ورسٹی ہے یہ جب تک قائم ہے ان کا نام زندہ رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہم اپنے جی ڈی پی کا کم از کم 3 فیصد تعلیم پر خرچ کریں تب 30 سال میں
جاکر دنیا میں کچھ کر سکیں گے۔ انہوں نے کہاکہ عالمی معیار کے مطابق ایک بچے کو 850 گھنٹے تعلیم دینی ہوتی ہے، جن میں گاؤں کے بچے بھی شامل ہیں لیکن ہمارے دیہات میں ایک بچے کو سالانہ صرف 150 گھنٹے تعلیم دی جاتی ہے جبکہ ملک میں 64 فیصدبچے ہیں، قوم اس طرح ترقی نہیں کر سکتی۔ انہوں نے کہا کہ سیاستدانوں اور سویلین کے لیے بہت کچھ کہا جاتا ہے جبکہ یہ ملک بھی ایک سیاستدان قائداعظم محمد علی جناح نے بنایا اور ہمدرد یونی ورسٹی ایک سویلین حکیم محمد سعید نے بنائی اور ہر پاکستانی بچے کے لیے بنائی، یہاں پھول کھلتے رہیں گے اور یہ گلشن ہمیشہ مہکتا رہے گا۔ اس سے قبل ہمدرد یونی ورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر سید شبیب الحسن نے یونی ورسٹی کی سلور جوبلی کی تقریبات کے انعقاد کا اعلان کیا۔ جامعہ ہمدردکے رجسٹرار پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین نے یونی ورسٹی کی کارکردگی پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ یہ یونی ورسٹی نجی شعبے میں سب سے بڑی یونی ورسٹی ہے جہاں اس وقت چھے ہزار طلبہ زیر تعلیم ہیں اور اب تک چھبیس ہزار طلبہ یہاں سے فارغ التحصیل ہو چکے ہیں۔ تقریب میں شوریٰ ہمدرد کراچی کے اسپیکر جسٹس (ر) حاذق الخیری ، جامعہ ہمدرد کے سابق وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر حکیم عبدالحنان ،پروفیسر ڈاکٹر سید شبیب الحسن، ماہرین تعلیم، اساتذہ اور طلبہ نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔
خورشید شاہ