یوسی 30میں سیوریج کا نظام تباہی کے دہانے پر

228

یوسی 30 بلدیہ ٹاؤن میں سیوریج کا نظام تباہی کے دہانے پر ہے۔ علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ کسی دور میں اس یوسی کو بلدیہ ٹاؤن کا ڈیفنس کہا جاتا تھا، لیکن آج یوسی کے علاقے A3 ، 5J، 5Gاور 5Bمیں سیوریج کا نظام تباہ ہو چکا ہے۔ یوسی میں قائم بلدیہ ٹاؤن کے سب سے بڑے تجارتی مرکز 24مارکیٹ کی ہر گلی میں سیوریج کا پانی بہتا ہوا نظر آتا ہے۔ علاقہ مکین یاور حیات کا کہنا تھا کہ مین ہولز کے ڈھکن غائب ہیں۔ گندگی ابل ابل کر سڑکوں پر ا? رہی ہے اور منتخب نمائندے بے بسی کی تصویر بنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس سے قبل یو سی میں عوامی نمائندوں نے بہت ترقیاتی کام کروائے ہیں۔ سابق ٹاؤن ناظم نے بھی بہت کام کروائے، لیکن موجودہ نمائندے اختیارات نہ ہونے کے باعث ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھے ہیں۔ فرنیچر مارکیٹ کے سامنے کی تمام دکانوں کے سامنے 15روز سے سیوریج کا پانی جمع ہے، جس کی وجہ سے فرنیچر مارکیٹ کی دکانوں کے مالکان انتہائی پریشان تھے۔ اس حوالے سے مارکیٹ کے صدر سے بات چیت کے دوران انہوں نے بتایا کہ حکام بالا سے اس حوالے سے بات چیت چل رہی ہے، جبکہ دوسری جانب دکانداروں کا کہنا تھا کہ ہم نے مل کر اپنی مدد ا?پ کے تحت تمام تر گندگی اور پانی کو صاف کروایا، جس کے لیے نجی طور پر خاکروبوں کی بھاری معاوضے کے عوض خدمات حاصل کی گئیں، لیکن یہ مسائل کا دیر پا حل نہیں۔ علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ A3 میں موجود طالبات کے مدرسے کے باہر انتہائی گندگی ہے، جس میں سے گزر کر طالبات مدرسے جاتی ہیں۔ علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ اختیارات کی جنگ میں عوام پستی جا رہی ہے۔ ا?خر ہم کس کے پاس جائیں اور کس سے اپنے مسائل حل کروائیں۔ مارکیٹ اور علاقہ کے لوگوں کا کہنا تھا کہ ہم نے اپنی مدد ا?پ کے تحت کچرے کے 16ڈمپرز علاقے سے اٹھوائے ہیں۔ اسی طرح گندگی کے خاتمے کے لیے علاقے میں اسکولوں اور کالجوں کے بچوں نے مل کر چاندی چوک میں 120 سے زاید پودے لگائے۔