سراج الحق کی اپیل پر ملک بھر میں باران رحمت کے لیے نماز استسقا

139

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق کی اپیل پر ملک بھر میں نماز جمعہ کے بعد نماز استسقا اداکی گئی جس میں خشک سالی کے خاتمے اور باران رحمت کے لیے گڑ گڑا کر دعائیں کی گئیں ۔ منصورہ میں نماز استسقا نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان حافظ محمد ادریس نے پڑھائی جس میں لاہور اور گردو نواح سے بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے حافظ محمد ادریس نے کہاکہ ہمیں بحیثیت قوم اللہ تعالیٰ سے اجتماعی توبہ و استغفار کی ضرورت ہے ۔ ملک
پر مسلط حکمران ٹولے نے مسلسل اللہ تعالیٰ سے بغاوت کا رویہ اختیار کر رکھاہے ۔ شراب سے سیکڑوں لوگوں کی ہلاکتوں کے باوجود ملک میں اس کی فروخت جاری ہے اور حکومت باقاعدہ فروخت کے پرمٹ جاری کرتی ہے ۔ ملک اربوں ڈالر کا مقروض ہے ۔ معیشت تباہ اور عوام بنیادی ضروریات زندگی سے محروم ہیں ۔ غربت ، مہنگائی اور بے روزگاری میں مسلسل اضافہ ہورہاہے مگر حکمران سود،جسے اللہ اور رسول ؐ کے خلاف اعلان جنگ قرار دیا گیاہے ، چھوڑنے کو تیار نہیں ۔ ملک میں پھیلی عریانی و فحاشی اور بے حیائی سے شہریوں کا دم گھٹنے لگاہے مگر حکمران اصلاح احوال کے لیے تیار نہیں بلکہ اب تو نقاب پہننے والی بچیوں کو تعلیمی اداروں میں داخلہ دینے سے انکار ہونے لگاہے ۔ انہوں نے کہاکہ اللہ کی رحمت و مغفرت کے لیے ضروری ہے کہ حکمران باغیانہ رویہ چھوڑ کر اللہ سے معافی مانگیں تاکہ موسموں کی شدت اور خشک سالی سے نجات مل سکے ۔ دریں اثنا پشاور ، فیصل آباد، ملتان اور کوئٹہ سمیت ملک بھر کے چھوٹے بڑے شہروں میں امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق کی اپیل پر نماز استسقا ادا کی گئی اور بارش کے لیے دعائیں مانگی گئیں ۔ پشاور کی تاریخی مسجد مہابت خان میں نماز استسقا کی امامت مولانا طیب قریشی نے کی۔ المرکز اسلامی پشاور میں مولانا عبدالاکبر چترالی کی امات میں نماز استسقا ادا کی گئی جس میں بڑی تعداد میں جماعت اسلامی کے کارکنان اور عوام نے شرکت کی ۔ بلوچستان میں کوئٹہ سمیت 6 شہروں میں نماز استسقا پڑھی گئی ۔ عبدالکبیر شاکر ، مولانا رحمت اللہ اور ڈاکٹر عطا الرحمن نے امامت کرائی ۔ فیصل آباد مدینہ ٹاؤن میں نماز استسقا کا بڑا اجتماع ہوا اور پروفیسر محبوب الزمان بٹ نے امامت کی اور اللہ کے حضور باران رحمت کے لیے دعائیں کی گئیں ۔ ملتان میں جامع العلوم میں نماز استسقا کا بڑااجتماع ہوا مولانا عبدالرزاق کی امات میں نماز ادا کی گئی ۔