بجل? س? ا?ن? والا دن?ا ?ا پ?لا ?وائ? ج?ازت?ار

219

بجلی سے اڑنے والا دنیا کا پہلا ہوائی جہاز تیار کرلیا گیا جس کو پیرس میں جاری ایئر شو میں لوگوں کے سامنے پیش کیا گیا۔

پیرس میں جاری ایئر شو میں بجلی سے اڑنے والے ہوائی جہاز کی نمایش کی گئی جو ایک مرتبہ چارج ہونے پر 136 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے گھنٹہ بھر تک سفر نے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

ای فین نامی طیارے 2.0 میں دو افراد بیک وقت ہوائی سفر کرسکتے ہیں اس طیارے کو بنانے والی ایئربس کمپنی کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اس ماڈل کو 2017 تک فروخت کے لئے مارکیٹ میں پیش کردیا جائے گا۔

ایئربس کمپنی کی طرف سے کہا گیا ہے کہ کمپنی کا ٹارگٹ ہے کہ ایسی ہی نوعیت کے 100 نشتوں والے ہوائی جہاز کی تکمیل کو 2050 تک مکمل کرلیا جائے۔

بجلی سے چلنے والے ہوائی جہاز کو ایئر بیس کمپنی نے خاموش جہاز کا نام دیا ہے جس سے کاربن ڈائی آکسائیڈ کا اخراج نہیں ہوتا۔ کمپنی ترجمان کے مطابق دو کروڑ ڈالر کی خطیر رقم ہوائی جہاز کی ڈیزائننگ اور اس کی تیاری میں خرچ کی گئی۔

خاموش جہاز کا نام پانے والے اس ہوائی جہاز کا وزن نصف ٹن ہے جس میں لیتھیئم آئن پالیمر بیٹریز نصب ہے اور پروں کا سائز 31 فٹ ہے اور اس میں نصب بجلی کی موٹریں 60 کلوواٹ کی قوت پیدا کرتی ہیں۔ ایئربس کمپنی نے اسی ماڈل کے ساتھ مکمل طور پر بجلی سے پرواز کرنے والے ہیلی کاپٹر تیار کرنے کا اعلان بھی کیا ہے۔