رو?نگ?ا مسلمانو? ?? قتل عام پرعالم? برادر? ?? مجرمان? خاموش? سوال?? نشان ??،چو?در? نثار

269

وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام اور ان پر ڈھائے جانے والے مظالم پر انسانی حقوق کے علمبرداروں اورعالمی برادری کی مجرمانہ خاموشی عالمی فورمزکے فعال اور موثر ہونے پر سوالیہ نشان ہے، یہ ادارے انسانی حقوق اورجمہوری اقدارکے فروغ اور دفاع کے دعویدار ہیں، اقوام متحدہ ، او آئی سی ، مسلم دنیا اورعلاقائی طاقتوںسے اپیل ہے کہ وہ عالمی برادری سے کہیں کہ وہ اس قتل عام پر اپنی آنکھیں بند نہ کرے ۔

ہفتہ کو اپنے بیان میں وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ بے یارو مدد گار مسلمانوں پر اس درجے مظالم اور جارحیت سے خطرہ ہے کہ مسلمان عسکریت پسندوں کے ہاتھوں بھٹک سکتے ہیں جس سے دہشت گردی کے خلاف حالیہ کاوشوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے ۔ وزیرداخلہ نے کہا کہ ماسوائے چند ایک مسلمان ممالک کے مسلم دنیا کی جانب سے روہنگیا مسلمانوں کے لئے کوئی سنجیدہ کاوش دیکھنے میں نہیں آئی ، یہ ہمارے اپنے مسلمان بھائیوں کے ساتھ رویے کی عکاسی کرتا ہے اور یہ پوری مسلم دنیا کےلئے سخت تشویش کا باعث معاملہ ہے ۔

وزیرداخلہ نے کہا کہ انہوں نے کابینہ میں دو بار یہ معاملہ اٹھایا ہے جبکہ بجٹ کے موقع پر کابینہ کے اجلاس میں بھی انہوں نے یہ معاملہ اٹھایا جس میں وزیراعظم اور تمام کابینہ نے بھی میانمرمیں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم پر سخت تشویش کا اظہارکیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف نے ایک کمیٹی تشکیل دی ہے جو وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان، وزیراعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی و خارجہ امور سرتاج عزیز اور طارق فاطمی پرمشتمل ہوگی جو میانمر کے روہنگیا مسلمانوں کےلئے پاکستان کی جانب سے ریلیف کی کوششیں اور اقدامات تجویز کرے گی۔ کمیٹی کا اجلاس اتوار کو ہوگا جس میں اس مسئلہ پرغورکیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ وہ پرامید ہیں کہ حکومت پاکستان میانمرکے مظلوم مسلمانوں کےلئے فعال کردارادا کرے گی۔