مئ? ?? آخر? ?فت? م?? م?نگائ? ?? شرح م??0.69ف?صد اضاف?

250

مئی کے آخری کاروباری ہفتے کے اختتام پر مہنگائی کی مجموعی شرح میں گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلے میں0.69فیصد اضافہ ہوا ۔

وفاقی ادارہ برائے شماریات پاکستان کی جانب سے جاری اعدادو شمار کے مطابق رواں ماہ کے آخری ہفتہ کے اختتام پر15اشیاء کی قیمت میں اضافہ ‘10اشیاء کی قیمتوں میں کمی جبکہ 28اشیاء کی قیمتوں میں استحکام رہا۔اعدادوشمار کے مطابق 8ہزار روپے ماہانہ آمدنی والے طبقات کیلئے مہنگائی کی شرح میں 1.10فیصد اضافہ ہوا‘8سے 12ہزار روپے آمدنی والے طبقات کیلئے بھی1.10فیصد‘12ہزار ایک روپے سے18ہزار روپے ماہانہ آمدنی والے طبقات کیلئے1.32فیصد‘18ہزار ایک روپے سے35ہزار روپے آمدنی والے طبقات کیلئے1.04فیصد‘35ہزار روپے ماہانہ آمدنی والے طبقات کیلئے مہنگائی کی شرح میں اضافہ نہیں ہوا۔

ملک کے 17بڑے شہروں سے 53اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کے حوالے سے اعدادوشمار کے مطابق جن 15اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ان میں ٹماٹر‘کیلا‘زندہ فارمی مرغی‘آلو‘چائے کی پتی ‘گھریلو ایل پی جی گیس سلنڈر‘لاہوری نمک‘چینی‘دال مسوردھلی ہوئی‘صابن‘سرخ مرچ پسی ہوئی‘جلانے والی لکڑی ‘چھوٹا گوشت اور دہی وغیرہ شامل ہیں جبکہ جن 10اشیاء کی قیمت میں کمی ہوئی ان میں فارمی مرغی کے انڈے‘پیاز‘لہسن‘گندم‘دال ماش دھلی ہوئی‘10کلو آٹے کا تھیلا‘دال مونگ دھلی ہوئی‘ٹوٹہ باسمتی چاول ‘بناسپتی گھی کھلا اور گڑ شامل ہیں۔