پاکستانی عوام آزمائشوں سے گزر کر طاقتور قوم بن رہے ہیں، صدر مملکت

107
اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی عالمی اسلامک یونیورسٹی کے کاووکیشن سے خطاب کررہے ہیں

اسلام آباد (اے پی پی) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ پاکستانی قوم کڑی آزمائشوں سے گزر کر ایک طاقتور قوم میں تبدیل ہورہی ہے، گزشتہ 30، 40 سال میں پاکستان جن ادوار سے گزرا ہے اس سے پاکستان کے عوام نے سیکھا ہے، اس قوم اور قیادت نے پچھلے ماہ جو فیصلے کیے اس پر اللہ تعالیٰ کا شکر گزار ہوں، علم کی بنیاد پر معاشرے کے اندر اچھائی پھیلانے کا ثمر ابدی ہے، ہمدردی اور احساس سے عاری علم بے سود ہے۔ بدھ کو بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کے کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ تعلیم ہی ہر چیز کا حل ہے، معاشرے میں کبھی کبھی والدین کی تربیت کا فقدان نظر آتا ہے، میں والدین کا شکر گزار ہوں کہ وہ آپ کو یہاں لائے اور آپ پر خرچ کیا۔ انہوں نے طلبہ اور اساتذہ سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ علم کا مقام تو آپ جان گئے ہوں گے مگر علم کے راستے کا تعین کرنا باقی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک علم وہ ہے جس کو حاصل کر کے انسان اپنا روزگار کمانے کے قابل ہوتا ہے اور ایک وہ علم ہے جو معاشرے کے لیے انسان کو تیار کرتا ہے۔ صدر نے طلبہ سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ جو امانت آپ کو پاکستان اور انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد نے دی ہے، اس کا احسان آپ نے اتارنا ہے۔ صدر نے کہا کہ ضروری نہیں کہ آپ فوراً زندگی کے میدان میں آگے نکل جائیں مگر کارخیر میں شامل ہوں۔ انہوں نے کہا کہ انصاف کے لیے علم ضروری ہے۔ وہ علم جس میں ہمدردی نہ ہو وہ اکیڈمک کیفیت ہے۔ مسلم دنیا ایک زوال کے دور سے گزر کر ایک طاقتور امت میں تبدیل ہو رہی ہے۔ پاکستان میں پچھلے مہینے اﷲ تعالیٰ نے جو برکتیں ڈالی ہیں جب ہم پر حملہ بھی ہوا، اس دوران اس قوم اور اس قوم کی قیادت سے جو فیصلے کروائے اس پر اﷲ تعالیٰ کا مشکور ہوں اور میں آپ سے بھی کہتا ہوں کہ اللہ تعالیٰ کا شکر ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ آپ کی زندگی کے راستے میں مسلسل وہ موڑ آئیں گے جس میں آپ کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ آپ نے کیا کرنا ہے۔