انٹر ٹیکسٹائل شنگھائی میں27 پاکستانی کمپنیاں شریک ہونگی

78
انٹر ٹیکسٹائل شنگھائی اپیرل فیبرک 2018 میں کمال لمیٹڈ کا کے اسٹال کا منظر

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان نے چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت مشترکہ اداروں، صنعتی، سماجی ، اقتصادی اور زرعی تعاون کو فروغ دینے کے لیے 2019 کو دونوں ممالک کے لیے ایک اقتصادی تعاون کا سال بنانے پر اتفاق کیا ہے۔ چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت کی جانے والی صنعت کاری کے ذریعے ٹیکسٹائل کی صنعت کی قدر میں اضافہ ہوگا۔ پاکستان کو ایک جامع حکمت عملی کے تحت منصوبہ بندی کرنی ہوگی تا کہ یہ ون بیلٹ ون روڈ کا استحصال گلف سے لے کر یورپ تک کی کپڑے کی ضرورت کو پورا کرنے میں مددگارثابت ہوگا۔ انٹر ٹیکسٹائل شنگھائی اپیرل فیبرک میں ،اپیرل، فیبرک اور ایسے سیریز بنانے والی کمپنیاں اس صنعت سے جڑے ہوئے ہزاروں خریداروں اور سپلائرز کی توجہ کو اپنی طرف مبذول کریں گے۔ یہ نمائش 12 سے 14مارچ 2019 شنگھائی، چین میں یارن ایکسپو اور انٹر ٹیکسٹائل شنگھائی ہوم کے اسپرنگ ایڈیشن کے ساتھ ہوگی۔یارن ایکسپو اور انٹر ٹیکسٹائل شنگھائی ہوم کے ساتھ اس نمائش میں گزشتہ برس 4,053 نمائش کنندگان نے 22 ممالک سے جبکہ تقریباً 100,000 تجارتی خریداروں نے دنیا بھر سے شرکت کی۔بیونڈ دینم، ڈینم کے لیے مخصوص کردہ زون ہے جو کہ اس انڈسٹری سے تعلق رکھنے والوں کے لیے نئے طرز اور مصنوعات کی جدت کو پیش کیا جاتا ہے۔نمائش کنندگان میں شرکت کر نے والی کمپنیوں میں کوہِ نور،محمود ٹیکسٹائل ، سفائر ٹیکسٹائل، کمال لمیٹڈ، سرینا ٹیکسٹائل ، ریالائنس ویونگ، ایزگارڈ 9 ، سورتی انٹرپرائزز، رجبی ٹیکسٹائل، راجوانی ڈینم، ایب ٹیکس انٹر نیشنل،فضل کلاتھ اور ناصر اسپیننگ شامل ہیں۔ٹریڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان بھی پاکستان پویلین کا انعقاد کر رہا ہے۔انٹر ٹیکسٹائل شنگھائی اپیرل فیبرک اینڈ یارن ایکسپو کا آٹم ایڈیشن 25 سے 27 ستمبر کو ہوگا، اپیرل فیبرک کی نمائش ۔ٹیکس ورلڈ۔ اپیرل سورسنگ، یو ۔ایس۔اے22سے 24 جولائی کو ہوگی جبکہ ٹیکس ورلڈ۔ اپیرل سورسنگ پیرس 16سے19 ستمبر اور افریقا سورسینگ اینڈ فیشن ویک 9 سے12 نومبر 2019 میں ہوگا۔