بھارت حالات کو ایٹمی جنگ کی جانب لے جارہا ہے،سراج الحق

70
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق کنٹرول لائن متاثرین سے چھمب سیکٹر میں خطاب کررہے ہیں
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق کنٹرول لائن متاثرین سے چھمب سیکٹر میں خطاب کررہے ہیں

اسلام آباد /لاہور/ بھمبر/برنالہ/سماہنی (نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینٹر سراج الحق نے کہاہے کہ بھارت ہماری سرحدوں پر مسلسل حملے کررہا ہے،بھارتی وزیراعظم نریندرمودی خطرناک اژدہے کی طرح پھنکار رہا ہے اوراس کی وجہ سے نہ صر ف پاکستان بلکہ بھار ت کو بھی خطرہ ہے،بھارت کے اقدامات سے پوری دنیا کے امن کو خطرہ ہے،جس اندا ز سے نریندر مودی جارحیت کررہاہے اس سے حالات ایٹمی جنگ کی طرف جارہے ہیں جس سے پوری دنیا متاثر ہو گی،کشمیر ایک خطہ نہیں بلکہ ایک نظریہ ہے،آپ لوگوں کو مارسکتے ہیں لیکن آج تک دنیا میں کوئی ایسا اسلحہ ایجاد نہیں ہوا جو نظریہ لاالہ الااللہ کو شکست دے،یہ کلمہ اتنا ابھرے گا جتنا اسے دبانے کو شش کی جائے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جھمب سیکٹر ،برنالہ اور بھبمرکے دورے اور متاثرین کے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وہ میجر عزیز بھٹی شہید کی قبر پر گئے اور فاتحہ خوانی کی۔ ان کے ہمراہ امیر جماعت اسلامی وسطی پنجاب امیر العظیم، امیر جماعت اسلامی شمالی پنجاب ڈاکٹر طارق سلیم،امیر جماعت اسلامی آزاد کشمیرخالد محمود ،نائب امیر جماعت اسلامی آزاد کشمیر جہانگیر خان،سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی پاکستان قیصرشریف بھی تھے۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ پاکستان کے غیرت مند عوام اور ہماری افواج کشمیریوں کی پشت پر موجود ہیں اور پاکستان کا ہر نوجوان کوہ ہمالیہ کی طرح استقامت کے ساتھ موجود ہے ۔ ہمارے نوجوانوں کے لیے نمونہ میجر عزیز بھٹی شہید اور کیپٹن سرور شہید ہیں۔ وہ شہدا جنہوں نے پاکستان کی خاطر اپنی جانیں قربان کی ہیں وہ ہمارے ہیروز ہیں۔ کنٹرول لائن پر مسلسل حملوں کی وجہ سے ہمارے سیکڑوں اور ہزاروں لوگ بے گھر ہوگئے ہیں۔بھارتی فائرنگ کی وجہ سے لوگ بستی چھوڑنے اور ہجرت کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔میں ان کو پیغام دے رہاہوں کہ ہمارے دل اور گھر ان کے لیے کھلے ہیں۔انہوں نے کہا کہ افغانستان جہاد کی وجہ سے روس 7 حصوں میں تقسیم ہوا ۔ اسی طرح کشمیری جدوجہد کی وجہ سے بھارت کے اندر نئی ریاستیں وجود میں آئیں گی۔بھارت کے اندر ایک بغاوت ہے ،بھارت کے اندر موجود سرکار نے وہاں اقلیتوں کو دبایا ہے۔نفرت اور تعصب کی سیاست کی ہے اس لیے اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے اور شکست سے بچنے کے لیے انہوں نے پاکستان پر کیچڑ اچھالا اور حملے شروع کردیے ہیں۔پاکستان کی حکومت کا خیال تھاکہ مودی کو پا ئلٹ واپس کرکے اس کے ساتھ مذاکرات کی اپیلیں کرکے وہ اس صورت حال کو بہتر بنائیں گے۔ لیکن اس کے مقابلے میں بھارت نے شاکر اللہ کو مار کر لاش تحفے میں دی ہے۔اس کے جواب میں شکریہ ادا کرنے کے بجائے جماعت اسلامی مقبوضہ کشمیر پر پابندی لگا دی۔ہمارے دفاتر سیل کیے ہزاروں کارکنان کو جیلوں میں ڈالا ہے۔کشمیر کی وجہ سے جس کے چاروں طرف نیوکلیئر پاور موجود ہے ایک طرف روس،دوسری طرف چین اور پاکستان اور بھارت نیو کلیئر پاور ہیں۔یہ لڑائی باڈرز کی نہیں تجارت کی نہیں بلکہ اس کی بنیاد کشمیر ہے۔پلوامہ میں50بھارتی ہلاک ہوگئے۔ بھارت نے پروپیگنڈاکیا کہ ان کے خلاف دہشت گردی ہوئی ہے اور پاکستان اس میں ملوث ہے۔ پاکستان نے کہا کہ اس دہشت گری میں ہم شامل نہیں ہیں ۔ 18 سالہ عادل نے جان ہتھیلی پر رکھ کر قربانی دی تو اس لیے کہ ان کی عزت کو خطرہ تھا۔کشمیر کی بیٹیاں اور مائیں خطرے سے دو چار ہیں۔جلسے اور احتجاج وہ قوم70 سال سے کررہی ہے، ایک لاکھ کشمیری شہید ہوگئے ہیں۔اسکول کے بچوں کے چہروں پر پیلٹ گن سے فائر کرکے ان کو اندھا کردیا گیا ہے۔اس موقع پر انہوں نے متاثرین میں راشن تقسیم کیا اورفیلڈ میں کام کرنے والے الخدمت فاؤنڈیشن کے کارکنوں کی حوصلہ افزائی کی اور ان کا شکریہ ادا کیا ۔