چین نے دفاعی بجٹ بڑھا دیا، ایشیائی ممالک کو تشویش

88

بیجنگ: چین نے 2019 میں اپنی فوج کے بجٹ میں 7.5 فیصد اضافہ کر دیا ہے جس کے باعث پڑوسی ایشین ممالک میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

حالیہ اضافے کے بعد حاصل رقم پیپلز لبریشن آرمی کے لیے جدید اسلحہ، جنگی جہازوں، گولہ بارود اور مشینری کی خریداری پر خرچ کی جائے گی۔

نیشنل پیپلز کانگریس کی رپورٹ کے مطابق 2019 میں چینی حکومت اپنے دفاع پر 177.6ارب ڈالر خرچ کرے گی۔

چین نے فوجی اخراجات میں دنیا کے کئی ممالک کو پیچھے چھوڑ دیا ہے اور اس فہرست میں اس کا دنیا میں دوسرا نمبر ہے، 82.9ارب ڈالر فوجی اخراجات کے ساتھ سعودی عرب تیسرے نمبر پر ہے جبکہ 2018 میں روس نے تقریباً 63ارب ڈالر اور بھارت نے 57.9 ارب ڈالر خرچ کیے۔

واضح رہے کہ تائیوان، ویتنام، فلپائن، برونائی، ملائیشیا تنازعات جبکہ جاپان تاریخی سطح پر سرحدی مسائل کی وجہ سے چین کے بھاری بجٹ پر ہمیشہ تحفظات کا اظہار کرتے رہے ہیں۔

تاہم ترجمان نیشنل پیپلز کانگریس زینگ یسوئی نے کہا کہ چین کے بھاری دفاعی اخراجات کا مقصد اپنی خود مختاری اور تحفظ کو یقینی بنانا ہے اس سے دیگر ممالک کو خطرات لاحق نہیں۔