لاہور کینٹ سے کراچی کینٹ کے درمیان جناح ایکسپریس کے نام سے نان ا سٹاپ ٹرین چلانے کا فیصلہ،

60

وفاقی وزیر ریلوے کی ہدایت پرپاکستان ریلوے نے 20مارچ 2019 ؁ء سے لاہور کینٹ سے کراچی کینٹ کے درمیان جناح ایکسپریس (31 اپ 32/ڈاون) کے نام سے نا�آاسٹاپ ٹرین چلانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ شیڈول کے مطابو اس ٹرین میں لاہور سے کراچی کامکمل کرایہ 7000ہزار روپے اور بچے کا کرایہ 5250 روپے ہوگا۔

خانیوال،روہڑی اور حیدرآباد اس کے اسٹاپ ہونگے۔ کھانا اور دوسری سروسز ٹرین کے کرائے میں شامل ہونگی۔اس ٹرین میں 48گھنٹے پہلے ریزرویشن کروانے پر 5فیصد رعایت کی سہولت لاگو نہیں ہوگی۔

اس ٹرین میں آرمی وویچر/ورنٹس کے علاوہ کسی قسم کی رعایت نہیں دی جائے گی۔اگر کوئی مسافر راستے کے کسی اسٹیشن سے اس ٹرین پر بیٹھتا ہے تو اس سے بھی مکمل کرایہ 7000ہزارروپے وصول کیا جائے گا ۔

جناح ایکسپریس میں ٹرین کے اندر سے ٹکٹ بنوانے پرکم سے کم 1350روپے اضافی وصول کئے جائینگے۔ اس ٹرین کے ساتھ جانے والے آفیسرز اور ا سٹاپ کو بھی اے جی ایم ٹریفک سے اجازت لینا ہوگی ۔

ریلوے کی تاریخ میں یہ پہلی نان ا سٹاپ ٹرین ہوگی جو نسبتاً کم وقت میں لاہور سے کراچی اور کراچی سے لاہور کے درمیان اپنا سفر مکمل کریگی۔ 

اس ٹرین کا کرایہ11مارچ سے ریلوے کی ویب سائٹ پر بھی موجود ہوگا ۔

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ یہ ٹرین موجودہ حکومت کی طرف سے صاحب ثروت طبقے کے لیے ایک تحفہ ہوگی ۔اس سے پہلے پشاور سے کراچی کے لیے متوسط طبقے کے لوگوں کے لیے رحمان بابا ایکسپریس چلائی گئی تھی جس کا کرایہ کراچی سے پشاور تک صرف 1350روپے رکھا گیاتھا۔