بھارت نے مقتول پاکستانی شہری کا دل اور دماغ بھی نکال لیا

71

بھارت کی جے پورجیل میں شہید کیے جانے والے پاکستانی قیدی شاکراللہ کے جسم سے ان کا دل اور دماغ بھی نکال لیا گیا، یہ انکشاف شہید پاکستانی قیدی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں ہوا۔

ابتدائی میڈیکل رپورٹ کے مطابق شہید کے سر میں گہری چوٹ اُن کی موت کی وجہ بنی، شاکر اللہ کا بھارت میں بھی ایک پوسٹ مارٹم ہو چکا تھا۔رپورٹ کے مطابق سر پر لگنے والی چوٹ اتنی شدید تھی کہ اس کا اثر کھوپڑی کے نیچے تک ہوا، اُن کے جسم کے مختلف حصوں کے نمونے فرانزک لیب لاہور بھجوا دیے گئے۔

پلواما واقعے کے بعد بھارتی انتہاپسندوں کے تشدد سے جیل میں شہید ہونے والے شاکراللہ کا پوسٹ مارٹم گورنمنٹ علامہ اقبال ٹیچنگ اسپتال میں کیا گیا۔ابتدائی میڈیکل رپورٹ میں شاکر اللہ پر تشدد ثابت ہوگیا۔ سر میں گہری چوٹ موت کی وجہ بنی، سر پر چوٹ اتنی شدید تھی کہ کھوپڑی کے نیچے تک اثر ہوا۔

رپورٹ کے مطابق شہید شاکراللہ کا ایک پوسٹ مارٹم پہلے بھی ہوچکا تھا، ان کے جسم سے دماغ اور دل غائب تھے۔ اس حوالے سے ڈپٹی کمشنر کی ہدایت پر 6 رکنی میڈیکل بورڈ بنایا گیا ہے۔پاکستانی قیدی شاکر اللہ کی بھارتی جیل میں بہیمانہ تشدد سے قتل کی سینیٹ میں شدید الفاظ میں مذمت کی گئی۔