امریکا کے کہنے پر مذاکرات یا پائلٹ کی واپسی سے کچھ حاصل نہیں ہوگا،حافظ نعیم

545
امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن تحفظ پاکستان ریلی سے خطاب کررہے ہیں
امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن تحفظ پاکستان ریلی سے خطاب کررہے ہیں

کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ پوری قوم اور افواج پاکستان بھارت کی جارحیت کے مقابلے کے لیے متحد اور تیار ہیں ،بھارت نے حملہ کیا تو اسے منہ کی کھانی پڑے گی اورقوم سیسہ پلائی ہوئی دیوار بنے گی ، امریکا کے کہنے پر مذاکرات کرنے یا بھارتی پائلٹ کو واپس کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوسکے گا کیونکہ لاتوں کے بھوت باتوں سے نہیں مانتے ، بھارت کشمیر کبھی پلیٹ میں رکھ کر نہیں دے گا ،ایسا نہ ہو کہ میدان میں جیتی ہوئی جنگ ایوان میں ہار جائیں، جذبہ جہاد اور شوق شہادت سے لیس ہوکر ہی کشمیر کو آزاد کرایا جاسکتا ہے ، افواج پاکستان کا موٹو بھی ایمان ، تقویٰ اور جہاد فی سبیل اللہ ہے ،سافٹ امیج کے نام پر اسے دور نہیں کیا جاسکتا ، شہر بھر میں رضاکاروں کی رجسٹریشن کے لیے کیمپ لگائے جارہے ہیں ، وطن عزیز کی حفاظت کے لیے سب کومل کر جدوجہد کرنی ہوگی ،اگر ضرورت پڑی تو کراچی کے نوجوان حسن محمود صدیقی کی طرح اگلے مورچوں پر لڑنے کے لیے بھی تیار ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیو ایم اے جناح روڈ پر جماعت اسلامی کے تحت ’’تحفظ پاکستان ریلی ‘‘ کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ریلی سے نائب امیر کراچی ڈاکٹر اسامہ رضی نے بھی خطاب کیا۔قبل ازیں جیل چورنگی سے ریلی کا آغاز ہوا اور حافظ نعیم الرحمن کی قیادت میں ریلی کے شرکا نے پیدل مارچ کیا۔ اس موقع پر عوام بالخصوص نوجوانوں میں زبردست جوش وخروش دیکھنے میں آیا اور بھارت کی مذمت، افواج پاکستان سے یکجہتی اور قومی وحدت کے اظہار کے لیے پرجوش نعرے لگائے گئے ۔حافظ نعیم الرحمن نے مزید کہا کہ پوری قوم بھارت کے طیارے کو گرانے والے کراچی کے نوجوان حسن صدیقی اور ان کے اہل خانہ کو سلام پیش کرتی ہے ۔ آج نوجوانوں کے اندر جذبہ جہاد اور شوقِ شہادت موجود ہے اور یہ جذبہ جہاد اور قوت ہی اصل اثاثہ ہے جسے کوئی طاقت شکست نہیں دے سکتی ۔انہوں نے کہاکہ افواج پاکستان اور پاک فضائیہ کے شاہینوں نے بھارت کو منہ توڑ جواب دیا ہے ، شاہین کبھی نیچی پرواز نہیں کرتا اور نہ تھکتا ہے ،یہ پرواز اب اونچی ہی رہنی چاہیے اور بھارت اگر حملے کرے تو اسے سبق ضرور سکھایا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ پلوامہ کا واقعہ کوئی دہشت گردی نہیں ہے ، جو فوج مظلوم اور نہتے عوام ، بچوں اور بوڑھوں پر حملہ کرے ، خواتین کی بے حرمتی کرے اسے پھول یا گلدستے نہیں پیش کیے جاسکتے ، کشمیری عوام اپنی آزادی اور پاکستان کی تکمیل کی جنگ لڑرہے ہیں ،بھارت نے کشمیریوں کو طاقت کے بل پر غلام بنائے رکھنے کی کوشش کی ہے لیکن کشمیریوں نے ایک دن کے لیے بھی بھارت کی غلامی قبول نہیں کی ہے ، کشمیریوں کی مسلح جدوجہد ان کا قانونی حق ہے ، کشمیری عوام سیاسی اور عسکری محاذ پر سرگرم عمل ہیں اور بھارت کی تمام تر فوجی طاقت ، ریاستی دہشت گردی اور پیلٹ گنوں کے استعمال کے باوجود پیچھے ہٹنے کے لیے تیار نہیں ہے ۔ بھارت کشمیری مسلمانوں کے اندر جذبہ جہاد ، شوق شہادت اور آزادی حاصل کرنے کے جذبے کو ختم نہیں کرسکا ہے ۔برہان مظفر وانی کی شہادت نے تحریک آزادی کشمیر کو ایک نیا رخ دے دیا ہے ، بھارت اور پاکستان کے درمیان مسئلہ کشمیر حل کیے بغیر حالات بہتر نہیں ہوسکتے ، مقبوضہ کشمیر کے اندر ہر آنے والا دن جدوجہد آزادی کو تیز کررہا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بھارت ، امریکا اور اسرائیل ایک شیطانی اتحاد ہے جو دنیا بھر میں مسلمانوں کا خون بہانے میں مصروف ہے، بھارت کو ہمیشہ امریکا کی سرپرستی حاصل رہی ہے جس کی وجہ سے کشمیریوں کو ان کا حق خود ارادیت نہیں مل سکا۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ آج پورے ملک کے اندر قومی اتحاد ویکجہتی کا اظہار کیاجارہا ہے اس موقع پر محرومیوں کو دورکرنا چاہیے، جن کے حقوق سلب کیے گئے ہیں ان کو حقوق ملنے چاہئیں ، تمام لاپتا افراد کو رہا کیا جانا چاہیے اور قومی اتحاد و یکجہتی کے عمل کو جاری رہنا چاہیے ۔ڈاکٹر اسامہ رضی نے کہاکہ تحفظ پاکستان ریلی نے ایک مارچ کی شکل اختیار کرلی ہے اور بھارت کو یہ پیغام دیا ہے کہ پوری قوم اس کے مذموم عزائم اورجارحیت کے خلاف یکجا اور یک جان ہے اور ملک کے تحفظ اور سالمیت کے لیے خون کا آخری قطرہ بھی بہانے کو تیا رہیں ۔ انہوں نے کہاکہ مودی ایک بزدل انسان ہے ، گجرات کے مسلمانوں کا قاتل ہے ، دہشت گرد ہے جس پر امریکا نے خود پابندی لگائی تھی مگر آج وہ بھارت کا حکمران اور کشمیری مسلمانوں کے خلاف دہشت گردی کررہا ہے اور کھل کر پاکستان دشمنی کا اظہار کررہا ہے ۔