اقوام متحدہ کا وینزویلا بحران کو غیرجانبداری سے حل کرنے پر زور

21
وینزویلا: خودساختہ صدر اور اپوزیشن رہنما خوان گوائیڈو سابق وزرا سے ملاقات اور پارلیمان کی عمارت کے باہر صحافیوں سے بات کررہے ہیں
وینزویلا: خودساختہ صدر اور اپوزیشن رہنما خوان گوائیڈو سابق وزرا سے ملاقات اور پارلیمان کی عمارت کے باہر صحافیوں سے بات کررہے ہیں

نیو یارک (انٹرنیشنل ڈیسک) اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیریس نے کہا ہے کہ وینزویلا کے بحران کے سیاسی حل کے لیے کسی کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائے بغیر اور بنا کسی گروپ کا ساتھ دیے کوشش کریں گے۔ سیکرٹری جنرل نے اقوام متحدہ کی عمارت میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ وینزویلا کے بحران کا خدشات سے جائزہ لے رہے ہیں اور مختلف ممالک کے ساتھ رابطہ قائم رکھے ہوئے ہیں تاہم وہ کسی کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائے بغیر اور کسی گروپ کا ساتھ دیے بغیر بڑے منظم شکل میں اس مسئلے کو حل کرنے کی کوشش کریں گے۔ دوسری جانب 13 لاطینی امریکی ممالک کے لیما گروپ اور کینیڈا نے وینزویلا کے خلاف پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جس کا مقصد وینزویلا کے صدر نکولاس مادورو کو اقتدار سے علاحدہ ہونے پر مجبور کرنا ہے۔ کینیڈا کے دارالحکومت اوٹاوا میں ہونے والے کینیڈا اور لیما گروپ کے رکن ممالک کے ایک اجلاس میں یہ طے کیا گیا کہ کراکس میں مادورو حکومت کی وینزویلا کے بین الاقوامی اثاثوں تک رسائی معطل کر دی جائے گی۔