ہیومن ریسورسز کے شعبے پر مزید سرمایہ کاری کرنا ہوگی،گورنر سندھ 

27
ایمپلائر فیڈریشن آف پاکستان کے صدر مجید عزیزگورنر سندھ عمران اسماعیل کو شیلڈ پیش کررہے ہیں 
ایمپلائر فیڈریشن آف پاکستان کے صدر مجید عزیزگورنر سندھ عمران اسماعیل کو شیلڈ پیش کررہے ہیں 

کراچی(اسٹاف رپورٹر)گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ ہماری حکومت نوجوانوں کو روزگار کی فراہمی کے لیے پرعزم ہے اور ہمیں ہیومن ریسورسز کے شعبے پر مزید سرمایہ کاری کرنا ہوگی ،وہ مقامی ہوٹل میں ایمپلائر فیڈریشن آف پاکستان کے تحت منعقدہ بین الاقوامی ایچ آر کانفرنس و ایوارڈز کی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے ،اس موقع پر ای ایف پی کے صدر مجید عزیز رونالڈ تھامس ، میرمہدی علی ،عمیر جالیاوالا اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔گورنر سندھ عمران اسماعیل کا اپنے خطاب میں مزید کہنا تھا کہ روزگار کے نئے مواقع کی فراہمی کے لیے ہمیں تعلیم کو اہمیت دینی ہو گی اور اپنے مزاج کو تبدیل کرنا ہوگا ،ہم ملک میں سیاحت کو فروغ دے رہے ہیں اور حال ہی میں ہماری حکومت نے نئی ویزا پالیسی سمیت سیاحت کے فروغ کے لیے متعدد اقدامات اٹھائے ہیں،سیاحت کے فروغ کے لیے ایچ آر میں ایمپلائر فیڈریشن آف ایچ آر کا کردار انتہائی اہم ہے ،ہم نے خیبر پختونخواہ میں ایچ آر کا بہترین ماڈل تیار کیا ہے، ہمیں تعلیمی نظام میں اصلاحات لانا ہوں گی ،یہاں ڈرائیور کا بچہ بڑا ہوکر ڈرائیور ہی بنتا ہے ،ہمیںآنے والی نسلوں کے لیے کچھ کرنا ہوگا ،کچھ ایسا کرنا ہوگا کہ آج جو ڈرائیور اور درزی ہیں ،ہماری کوشش ہونی چاہیے کہ ان کی آنے والی نسلوں کا مستقبل بہتر ہو اور اس کے لیے ہمیں نوجوانوں کو یکساں مواقع فراہم کرنا ہوں گے ،گورنر سندھ نے کاروبار دوست مزدور قوانین کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان ملک میں کاروبار اور مزدور دوست قوانین کے نفاذ کے لیے پر عزم ہیں، مجید عزیز نے اپنے خطاب میں کہا کہ ورلڈ بینک کی ایک رپورٹ کے مطابق معاشی استحکام کے لیے ہیومین ریسورسز کے شعبے میں انتہائی ضروری ہے ،انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ طویل مدتی معاشی ،صنعتی اور لیبر پالیسی تشکیل دی جائے تا کہ مقامی و غیر ملکی سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہوسکے اور ملک میں سرمایہ کاری کی نئی راہ ہموار ہوسکے ،کانفرنس سے رونالڈ تھامس اور میر مہدی علی نے خطاب کرتے ہوئے ہیومین ریسورسز کے مستقبل اور ڈیجیٹل ہیومن ریسورسز کے حوالے سے روشنی ڈالی، انہوں نے کہا کہ ایچ آر پریکٹیشنز کو چند عوامل کا خاص طور پر خیال رکھنا چاہیے۔