نواز شریف کیخلاف فلیگ شپ ریفرنس‘نیب کے تفتیشی افسر کابیان قلمبند 

76

اسلام آباد (اے پی پی)احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف دائر فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت آج تک ملتوی کر دی ۔ گزشتہ روزاحتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک نے سماعت کی۔دوران سماعت سابق وزیر اعظم نواز شریف عدالت میں پیش ہوئے ۔ عدالت میں سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی،سابق اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق ، راجا ظفر الحق، ڈاکٹر طارق فضل چودھری، مریم اورنگزیب ، طارق فاطمی اور آصف کرمانی ،سابق اسپیکر پنجاب اسمبلی رانا اقبال، سابق گورنر کے پی کے سردار مہتاب عباسی بھی موجود تھے۔ سماعت کے دوران محمد نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث کے معاون وکیل زبیر خالد کی موجودگی میں نیب کے تفتیشی افسر محمد کامران نے بیان قلمبند کروایا۔ تفتیشی افسرنے بتایا کہ ایم ایل اے کے فالو اپ کے لیے برطانیہ گیا،،کمپنیز ہاؤس لندن میں حسن نواز کی کمپنیوں کے ریکارڈ کے حصول کے لیے درخواست دی۔ ریکارڈ کی فراہمی کے لیے ادا کی گئی فیس ضمنی ریفرنس کا حصہ ہے، کمپنیز ہاؤس میں حسن نواز کی 10کمپنیوں کے ریکارڈ کے لیے درخواست دی۔ تفتیشی افسر نے حسن نواز کی کمپنیوں کی ملکیتی جائداد کی تفصیلات عدالت میں پیش کیں۔تفتیشی افسرنے بتایا کہ حسن نواز کی 18کمپنیوں کے نام 17 فلیٹس اور پراپرٹیز ہیں۔ دوران سماعت محمد نوازشریف کے وکیل نے تفتیشی افسر کی طرف سے پیش کی گئی تفصیلات پر اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ تفتیشی افسر کی پیش کی گئی تفصیلات قانون کے تحت قابل قبول شہادت نہیں۔آج بھی تفتیشی افسراپنا بیان جاری رکھیں گے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ