قومی ائرلائن کوڈیفالٹر سیگمنٹ سے نکالاجائے‘انتظامیہ کامطالبہ

91

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) پی آئی اے نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج سے درخواست کی ہے کہ اسے ڈیفالٹر سیگمنٹ سے نکال دیا جائے ، وہ پاکستان اسٹاک ایکسچینج کی تمام شرائط کو پورا کرے گا۔ پاکستان اسٹاک ایکسچینج نے گزشتہ روز پی آئی اے کو ڈیفالٹر سیگمنٹ میں ڈال دیا تھا ۔ پی آئی اے کے خلاف یہ تادیبی کارروائی گزشتہ سال میں حصص یافتگان کا سالانہ اجلاس نہ بلانے اور آڈٹ شدہ حسابات جمع نہ کرانے پر عمل میں لائی گئی تھی ۔ پی آئی اے انتظامیہ نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں اس فیصلے پر نظر ثانی کی درخواست دیتے ہوئے یقین دہانی کرائی ہے کہ اکتوبر2018ء کے آخر میں بورڈ آف ڈائریکٹرز کا اجلاس بلایا جائے گا جس میں حسابات کی منظوری دی جائے گی جبکہ نومبر 2018 ء کے آخر میں سالانہ اجلاس عام منعقد کیا جائے گا۔ پی آئی اے کی انتظامیہ نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج سے درخواست کی ہے کہ جب تک کے لیے پی آئی اے کو ڈیفالٹر سیگمنٹ سے نکال دیا جائے ۔ واضح رہے کہ پی آئی اے کے تقریباً 94 فیصد حصص یا تو سرکاری ملکیت میں ہیں یا پھر ملازمین کے پاس ہیں ۔6 فیصد حصص میں سے بھی اکثر 4 بڑے گروپوں کی ملکیت ہیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ