ورلڈ کپ کرکٹ ٹرافی کراچی پہنچ گئی ،شائقین کا جوش وخروش

96
کراچی: سابق قومی کپتان معین خان نیشنل اسٹیڈیم میں ورلڈ کپ ٹرافی تھامے صحافیوں کو پوز دیتے ہوئے
کراچی: سابق قومی کپتان معین خان نیشنل اسٹیڈیم میں ورلڈ کپ ٹرافی تھامے صحافیوں کو پوز دیتے ہوئے

کراچی(سید وزیر علی قادری) کرکٹ ورلڈ کپ ٹرافی اسلام آباد سے کراچی پہنچ گئی ،جس کی تقریب رونمائی نیشنل کرکٹ اسٹیڈیم میں ہوئی۔ قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان معین خان نے ٹرافی کی رونمائی کی اور کہا کہ ورلڈ کپ کا فارمیٹ 1992ورلڈ کپ کے فارمیٹ کی طرح اچھا ہے۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس مرتبہ ورلڈ کپ پاکستان ہی جیتے گا کیونکہ کھلاڑیوں پر پورا اعتماد ہے اور یہی کھلاڑی ورلڈ کپ جتوائیں گے۔معین خان کا کہنا تھا کہ سرفراز کی قائدانہ صلاحیتوں سے کسی کو انکار نہیں کیونکہ ان کی بطور کپتان اور وکٹ کیپر میچ جیتنے والی کارکردگی رہی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سرفراز سیکھنے میں دلچسپی دکھاتے ہیں اور اگر وہ خود پرفارم کریں گے تو بہترین نتائج آئیں گے۔معین خان کے مطابق فی الحال نئے لڑکے ایسے نہیں کہ انہیں موقع دیا جائے تاہم موجودہ 17، 18 لڑکوں کو ہی اعتماد دلانا چاہیے، پوری ٹیم کو مل کر محنت کرنے کی ضرورت ہے لیکن اگر خوش فہمی میں رہے تو ورلڈ کپ کی ٹرافی پاکستان آنا مشکل ہوگی۔واضح رہے کہ کرکٹ ورلڈ کپ ٹرافی 6 روز پاکستان میں رہنے کے بعد کل بنگلادیش روانہ کردی جائے گی۔عالمی کپ کی ٹرافی نے 27 اگست کو دبئی سے اپنے سفر کا آغاز کیا تھا جو 21 ممالک کے 60 شہروں کا سفر طے کرے گی اور پہلی مرتبہ ٹرافی کی رونمائی ان ممالک میں بھی ہوگی جو آئی سی سی کا حصہ نہیں۔ورلڈ کپ ٹرافی کی آخری منزل لندن ہے جہاں وہ 19 فروری کو پہنچے گی، اور لندن ایونٹ کی میزبانی کرے گا۔آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ ٹرافی نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں رونمائی کے بعد فریئر ہال پہنچی جہاں سابق قومی کپتان معین خان ہی مہمان خصوصی تھے ۔ شائقین کی بڑی تعداد اس موقع پر پہنچ گئی اور زبردست جوش و خروش پایا گیا ۔ پاکستان زندہ باد اور پاکستان جیتے گا کے فلک شگاف نعرے گونجتے رہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے سینئیر میڈیا آفسر شکیل خان خصوصی طور پر ٹرافی کے ساتھ کراچی آئے جن کو دیکھ کر اسپورٹس جرنلسٹس نے مسرت کا اظہار کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ