ترکی میں بم دھماکے 7فوجی مارے گئے

105
ترکی: بم دھماکے کے بعد سڑک پر گڑھا پڑ گیا ہے‘ چھوٹی تصاویر جاں بحق فوجیوں کی ہیں
ترکی: بم دھماکے کے بعد سڑک پر گڑھا پڑ گیا ہے‘ چھوٹی تصاویر جاں بحق فوجیوں کی ہیں

انقرہ (انٹرنیشنل ڈیسک) ترکی کے بطمان صوبے میں سڑک کنارے بم پھٹنے کے نتیجے میں 7 فوجی ہلاک اور 3 زخمی ہو گئے ہیں۔ بین الاقوامی ذرائع ابلاغ کے مطابق ترک حکومت کے ایک اعلیٰ اہل کار نے تصدیق کی ہے کہ جنوب مشرقی ترکی میں سڑک کنارے نصب بارودی مواد پھٹنے سے 7 فوجی ہلاک ہو گئے۔ واقعہ کے بعد امدادی ٹیموں نے زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔ صدر رجب طیب اِردوان کی حکمران سیاسی جماعت کے نائب چیئرمین نعمان کرْتلمْس کے مطابق یہ حادثہ بطپمان صوبے میں پیش آیا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ تباہ ہونے والی بکتر بند گاڑی ایک فوجی آپریشن میں حصہ لینے کے لیے روانہ تھی۔ اس واقعے کے بعد ترک فوج نے جوابی کارروائی کے لیے ایک بڑے فوجی مشن کا آغاز کر دیا ہے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ترک سیکورٹی فورسز کا قافلہ معمول کے گشت پر تھا کہ اسی دوران سڑک کنارے نصب بم پھٹ گیا، حکام کی جانب سے ترک فوجیوں پر بم دھماکے کو کرد باغیوں کی کارروائی قرار دیا جا رہا ہے۔ دھماکے کے بعد ترک فوج اور سیکورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر آپریشن شروع کردیا ہے تاہم ابھی کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔ دوسری جانب ترک فوج کے مطابق گزشتہ 2 دنوں میں ترک باغیوں کے ٹھکانوں پر کارروائی کے نتیجے میں 13 باغی مارے گئے۔ دوسری جانب ترک فضائیہ نے شمالی عراق کے علاقوں آواشین، باسیان اور زاپ میں کارروائی کے دوران ’پی کے کے‘ کے 10 دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا۔ جنرل ہیڈ کوارٹرز کے مطابق شمالی عراق میں کی جانے والی اس کارروائی میں ترک فضائیہ نے ان دہشت گردوں کو اس وقت نشانہ بنایا جب وہ مختلف فوجی اڈوں کو نشانہ بنانے کی تیاری کر رہے تھے۔

 

Print Friendly, PDF & Email
حصہ