شاہ سلمان ہمارے بغیر حکومت نہیں کرسکتے،ٹرمپ

286

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کو متنبہ کیا ہے کہ امریکی فوج کی مدد کے بغیر وہ 2 ہفتے بھی اقتدارمیں نہیں رہ سکتے۔غیرملکی میڈیا کے مطابق صدر ٹرمپ نے منگل کو ریاست میسی سپی کے شہر ساؤتھ ہیونمیں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے قریبی اتحادی سمجھے جانے والے ملک سعودی عرب کے بارے میں ایک خلاف مصلحت بیان دیا۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ سعودی فرمانروا سے ملاقات میں واضح کر دیا تھا کہ امریکا سعودی عرب کی حفاظت کرتا ہے اور ہماری مدد کے بغیر حکمرانی قائم نہیں رکھ سکتے۔ امریکی صدر کا مزید کہنا تھا کہ میں نے شاہ سلمان سے اپنی ملاقات میں مطالبہ کیا کہ امریکی فوج کو سعودی حکومت کی حفاظت کرنے کا معاوضہ دیا جانا چاہیے اور معاوضے کے بغیر خدمات زیادہ عرصے تک حاصل نہیں کی جا سکتی ہیں۔ٹرمپ نے اپنے خطاب میں یہ واضح نہیں کیا کہ انہوں نے یہ باتیں شاہ سلمان کو کب اور کہاں کہیں تاہم وہ عوام کو مختلف انداز میں سعودی حکومت پر اپنے اثر و رسوخ کا بتاتے رہے۔سعودی عرب کے سرکاری خبررساں ادارے ایس پی اے کے مطابق ٹرمپ نے ہفتے کو شاہ سلمان سے فون پربات کی تھی اور انہوں نے تیل کی منڈیوں میں استحکام کے لیے تیل کی فراہمی کی کوششوں اور عالمی معاشی ترقی کے معاملات پر بات چیت کی۔سعودی عرب دنیا میں تیل برآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک اور اوپیک کا اہم رکن ہے، جسے ٹرمپ کی جانب سے تیل کی زیادہ قیمتوں پر تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔چندروز قبل نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ اوپیک رکن ممالک معمول کے مطابق پوری دنیا کو لوٹ رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہم ان میں سے بیشتر ممالک کا بلا وجہ دفاع کر رہے ہیں اور وہ ہم سے اس کا فائدہ بھاری قیمتوں میں ہمیں تیل دے کر حاصل کر رہے ہیں، یہ اچھا نہیں ہے، ہم چاہتے ہیں وہ قیمتیں نہ بڑھائیں اور قیمتوں میں کمی شروع کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ