پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان گوادر میں آئل ریفائزی کے قیام پر اتفاق

168

اسلام آباد(صباح نیوز،آن لائن،اے پی پی) وفاقی وزیر پیٹرولیم غلام سرور خان نے کہا ہے کہ سعودی عرب سے گوادر میں آئل ریفائنری کے قیام پراتفاق ہوا ہے۔ غلام سرور خان سے سعودی عرب کے مشیر توانائی کی قیادت میں وفد نے ملاقات کی ۔ملاقات میں غلام سرور خان نے کہاکہ ہم برادر ملک سے توانائی سمیت تمام شعبوں میں تعاون چاہتے ہیں جب کہ سعودی مشیر کا کہنا تھاکہ امید ہے ہمارے دورے کے مثبت نتائج نکلیں گے۔سعودی حکام سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر پیٹرولیم غلام سرور نے بتایاکہ سعودی عرب سے گوادر میں آئل ریفائنری کے قیام پراتفاق ہوا ہے، سعودیہ کو تیل اور گیس کی تلاش کے 10 بلاکس میں سرمایہ کاری کی دعوت دی ہے۔وزیر پیٹرولیم کا کہنا تھا کہ سعودی وفد نے تیل اور گیس میں سرمایہ کاری میں دلچسپی ظاہر کی ہے، سعودی عرب کے وزیر توانائی کا دورہ اکتوبر کے آخر میں متوقع ہے، سعودی وزیر توانائی کے دورے پر دونوں ملک ایم اویوز پر دستخط کریں گے،وفاقی وزیر پیٹرولیم غلام سرور خان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے سعودی عرب سے ادھار تیل لینے پر کوئی بات نہیں کی، اس حوالے سے چلنے والی خبروں میں کوئی صداقت نہیں۔پاکستان میں سرمایہ کاری کے حوالے سے جب آن لائن نے سعودی وفد کے سربراہ احمد حامد الغامدی سے سوال کیا کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کے بدلے میں آپ پاکستان سے کس چیز کی امید رکھتے ہیں تو ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے ساتھ پرانے تاریخی تعلقات ہیں ان تعلقات کو مزید مضبوط اور مستحکم کرنا چاہتے ہیں انہوں معاہدوں پر بات کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ ایم او یو پر دستخط سے پہلے کچھ نہیں بتا سکتے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان گوادر میں ریفائنری کے قیام کا معاہدہ ہوجائے گا اور دوسرا سعودی عرب کے ساتھ منرل ڈویلپمنٹ کا معاہدہ بھی ہوجائے گا۔علاوہ ازیں پاکستان اور سعودی عرب نے تجارت کے فروغ اور دونوں ممالک کے درمیان تجارتی حجم میں اضافہ کے لیے مجوزہ آزادانہ تجارتی معاہدے کے لیے بات چیت پر اتفاق کیا ہے۔ پاکستان نے سعودی عرب کو براہ راست آزادانہ تجارتی معاہدے پر بات چیت کرنے یا پہلے ترجیحی تجارتی معاہدے پر دستخط کرنے کی پیشکش کی تاکہ ایک دوسرے کی منڈیوں میں باہمی تجارتی مواقع فراہم ہوں۔ یہ بات سیکرٹری تجارت محمد یونس ڈھاگہ نے سعودی عرب کے تجارتی اور سرمایہ کاری وفد کو بدھ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہی۔ پاکستانی وفد کی قیادت سیکرٹری تجارت یونس ڈھاگہ جبکہ سعودی وفد کی قیادت مشیر توانائی احمد الغامدی کر رہے تھے۔ دونوں اطراف سے آزادانہ تجارتی معاہدہ سمیت کاروباری شعبوں میں آسانیاں پیدا کرنے کے امور پر تبادلہ خیال کیاگیا۔ اس موقع پر سیکرٹری تجارت یونس ڈھاگہ نے کہا کہ پاکستان سعودی عرب کے ساتھ ٹیکسٹائل، چمڑے، کھیلوں اور ادویات سمیت دوطرفہ تجارت بڑھانا چاہتا ہے تاکہ مشرق وسطیٰ کی مارکیٹ تک رسائی حاصل ہو سکے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ