فلسطین پت قراردادوں کو ویٹو کرنے کے منفی نتائج نکلے، اقوام متحدہ

106
مقبوضہ بیت المقدس: مغربی کنارے کے شہر البیرہ میں منگل کے روز قابض صہیونی فوج اور فلسطینیوں میں جھڑپ ہوئی‘نوجوانوں نے سڑک بند کررکھی ہے
مقبوضہ بیت المقدس: مغربی کنارے کے شہر البیرہ میں منگل کے روز قابض صہیونی فوج اور فلسطینیوں میں جھڑپ ہوئی‘نوجوانوں نے سڑک بند کررکھی ہے

نیو یارک (انٹرنیشنل ڈیسک) اقوام متحدہ نے فلسطین سے متعلق اپنی قراردادوں پر عمل میں تاخیر پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے دنیا سے قراردادوں پر فوری عمل کا مطالبہ کیا ہے۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق جنرل اسمبلی کے حالیہ اجلاس کے چیئرپرسن ماریا فیرنینڈا اسپنیوزا نے نیویارک میں پریس کانفرنس میں کہا کہ فلسطین سے متعلق عالمی ادارے کی قراردادوں پرعمل نہ ہونا افسوس کا باعث ہے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی برادری کو چاہیے کہ وہ فلسطین سے متعلق بین الاقوامی قراردادوں پرعمل کو یقینی بنائے۔ انہوں نے کہا کہ ہم فلسطینی قوم کے حقوق کی حمایت کرتے ہیں۔ ہم نے ہمیشہ فلسطین سے متعلق اقوام متحدہ کی قراردادوں پرعمل کو یقینی بنانے پر زور دیا ہے۔ یو این عہدے دار کا کہنا تھا کہ فلسطین سے متعلق سلامتی کونسل میں قراردادوں کو ویٹو کیا جانا منفی نتائج کا موجب بنا ہے۔ فلسطینیوں کے حقوق کے منصفانہ حصول کے لیے اقوام متحدہ کی قراردادوں پر ان کی روح کے مطابق عمل نا گزیر ہے۔ دوسری جانب انسانی حقوق کی تنظیموں اور فلسطینی سوسائٹی نے یورپی ملک ڈنمارک کے دارالحکومت کوپن ہیگن میں اسرائیل کو یہودی ریاست قرار دینے اور امریکا کی صدی کی ڈیل کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق مظاہرے میں سیکڑوں افراد نے شرکت کی۔ انہوں نے اپنے ہاتھوں میں بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر فلسطینیوں کے حقوق کی حمایت،اسرائیل کو یہودیوں کا قومی وطن قرار دینے کے قانون کے خلاف اور امریکا کی صدی کی ڈیل کے خلاف نعرے درج تھے۔ اس موقع پر مظاہرین نے ’اونروا‘ کی مالی امداد بند کرنے کے امریکی فیصلے کو انتقامی قرار دیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ