بھاشا، مہمند ڈیم میں سرمایہ کاری کریںگے ، سعودی وزیر توانا

201
اسلام آباد ،وزیر خزانہ اسد عمر سے سعودی وزیر توانائی احمد حامد الغامدی وفد کے ساتھ ملاقات کررہے ہیں
اسلام آباد ،وزیر خزانہ اسد عمر سے سعودی وزیر توانائی احمد حامد الغامدی وفد کے ساتھ ملاقات کررہے ہیں

اسلام آباد ( آن لائن،اے پی پی) بھاشا، مہمند ڈیم میں سرمایہ کاری کریں گے،سعودی وزیر توانائی۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کے دورے پر آنے والے سعودی وزیر توانائی احمد حامد الغامدی نے کہا ہے کہ پاکستان اور سعودی عرب کے مابین دوطرفہ تجارتی حجم کو بڑھانے کے لیے غور جاری ہے۔پاکستان میں دیامیر بھاشا اور مہمند ڈیم سمیت دیگر اہم شعبوں میں سرمایہ کاری کا ارادہ رکھتے ہیں۔ اہم سفارتی ذرائع کے مطابق سعودی عرب نے دیامر بھاشا اور مہمند ڈیم میں سرمایہ کاری میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ وزیر توانائی احمد حامد الغامدی کی سربراہی میں اسلام آباد میں موجود سعودی وفد نے مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد سے ملاقات کی۔ دونوں رہنماؤں نے ملاقات کے دوران دو طرفہ تجارت بڑھانے پر غور کیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ا علیٰ سطحی ملاقات میں دونوں ممالک کے مابین پرائیویٹ سرمایہ کاروں کے لیے آسانیاں پیدا کرنے کے امور پر غور کیا گیا اور تجارت بڑھانے کے لیے بزنس ویزہ میں سہولیات پر بھی بات کی گئی۔مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے سعوی عرب کو سی پیک اقتصادی مواقعوں سے بھرپور فائدہ اٹھانے کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ دو طرفہ تجارتی حجم کم ہے اس کو بڑھانے کی ضرورت ہے۔ اجلاس میں سعودی عرب میں پاکستانی مزدوروں کے معاوضوں کی ادائیگی یقینی بنانے پر بات چیت کی گئی۔حکام کو بتایا گیا کہ سعودی عرب میں 26 لاکھ پاکستانی ملازمتیں کررہے ہیں مشیر تجارت نے سعوی عرب کو سی پیک اقتصادی مواقوں سے بھرپور فائدہ اٹھانے کی دعوت دی ہے جبکہ دونوں ممالک نے دوطرفہ تجارت جس کا حجم 2 ارب 50 کروڑ ڈالر ہے اسے بڑحانے کی بھی بات کی گئی اجلاس میں کاروبار میں آسانیاں پیدا کرنے کے لئے اقدامات کا معاملہ بھی زیر غور آیا سعودی وفد نے کہا کہ سعودی عرب دونوں ممالک کے درمیان مواصلات کے شعبے میں تعاون بڑھانا چاہتا ہے جبکہ پاکستانی حکام کا کہنا تھا کہ سعودی عرب توانائی اور آئل اینڈ گیس کے شعبوں میں سرمایہ کاری کا خواہش مند ہے جبکہ پاکستان نے سعودی عرب کو ذراعت، آٹو اور سیمنٹ کے شعبوں میں سرمایہ کاری کی دعوت دی ہے۔ سعودی وفدنے پاکستان کے وزیر توانائی عمر ایوب سے بھی ملاقات کی ہے جبکہ عمر ایوب نے سعودی وفد کو دو ایل این جی منصوبوں میں سرمایہ کار کی پیش کش کردی ہے جبکہ وفد نے وفاق کے زیر انتظام چلنے والے دو ایل این جی منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی ظاہر کی ۔ذ رائع نے مزید بتایا کہ ملاقات کے دوران سعودی وفد نے دیامر بھاشا اور مہمند ڈیم سمیت دیگر اہم شعبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی کا اظہار کیا، ملاقات میں پاکستان نے سعودی عرب کو ایل این جی پلانٹس میں سرمایہ کاری کی پیشکش بھی کی۔سعودی وفد نے بلوچستان میں سونے اور تانبے کے بڑے ذخائر ریکوڈک پر بھی بریفنگ لی اور حکام نے ریکوڈک میں دلچسپی کا اظہار کیا ۔6 رکنی سعودی وفد میں حکومت سعودیہ کے مشیر احمد حامد الغامدی، ڈائریکٹرا سٹرٹیجک پارٹنر شپ زاریہ کرن ، منیجر ریفائینگ ابراہیم امین احمد، ڈائریکٹر کارپوریٹ افئیر شاف ال اسامی، بزنس ڈیولپمنٹ ڈائریکٹر ایاد العامری، ٹریڈ فسیلیٹیشن منیجر عبدالعزیز السند شامل تھے۔ سعودی وفد نے وزیر پٹرولیم غلام سرور خان سے بھی ملاقات کی جس میں وفاقی وزیر نے سعودی حکام سے تین سال سے پانچ سال تک تیل ادھار پر مہیا کرنے کی سفارش کی ہے جبکہ نجی ٹی وی کے مطابق پاکستان نے سعودی عرب سے روزانہ 2 لاکھ بیرل خام تیل ادھار پر لینے کی باضابطہ درخواست کردی ہے۔ذرائع کے مطابق درخواست میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کو روزانہ 2 لاکھ بیرل ادھار پر تیل چاہیے، پاکستان کو کم از کم 90 روز کے لیے تیل ادھار پر دیا جائے۔قبل ازیں پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان پاورآئل سرمایہ کاری، معدنیات، ریفائنری سمیت اہم شعبوں میں مذاکرات کا پہلا دور ختم ہوگیا ، ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان ابتدائی مفاہمتی یادداشتیں تیار کرلی گئی ہیں، سعودی وزیر خزانہ محمد بن عبداللہ الجدان منگل اور بدھ کی درمیانی رات پاکستان آئیں گے جس کے بعد یادداشتوں پر باقاعدہ دستخط ہوں گے ،مفاہمتی یادداشتوں اور معاہدوں کو حتمی شکل دینے کے لیے مذاکرات کا دوسرا دور بدھ کے روز ہوگا ۔ سوموار کے روز سعودی وفد نے وزیر خزانہ اسد عمر سے ملاقات کی جس میں پاکستان کی اقتصادیات، خصوصی مدد اور اصلاحات پر ابتدائی بات چیت ہوئی جس میں پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان اربوں روپے کی سرمایہ کاری کے دستاویزات کا تبادلہ بھی ہوا ۔سعودی عرب نے پاکستان کے تیل و گیس، معدنیات ،بندرگاہ انفراسٹرکچر سمیت مختلف سیکٹر میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ سعودی حکام کی طرف سے پاکستان کو خصوصی امدادی پیکج کے معاملے پر بھی بات چیت کی گئی ہے ۔وزارت منصوبہ بندی آبی وسائل نے بھی سعودی وفد کو بریفنگ دی اور ملک میں پانی کی ذصورتحال کے بارے میں تفصیل سے بتایا جبکہ نئے ڈیموں کے تعمیر پر بھی بات چیت ہوئی سعودی وفد آج بلوچستان کا دورہ کریگا جہاں سعودی وفد کو بلوچستان میں آئل ریفائینری کے قیام کے حوالے سے بریفنگ بھی دی جائیگی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ