انڈونیشیا : سونامی نے تباہی پھیردی ، ہلاکتیں 400 ہوگئیں

120
انڈونیشیا: زلزلے کے بعد سونامی سے مسجد شہید ہوگئی ہے‘ شہری اور امدادی کارکن لاشیں نکال کر اسپتال منتقل کررہے ہیں
انڈونیشیا: زلزلے کے بعد سونامی سے مسجد شہید ہوگئی ہے‘ شہری اور امدادی کارکن لاشیں نکال کر اسپتال منتقل کررہے ہیں

جکارتا (انٹرنیشنل ڈیسک) انڈونیشیا میں جمعے کے روز آنے والے 7.7 شدت کے زلزلوں اور سونامی کی تباہ کاریوں کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 400 ہو گئی ہے۔ مقامی حکام نے ہفتے کے روز بتایا کہ سولاویسی جزیرے کے دارالحکومت پالو میں ہونے والی اس تباہی کے نتیجے میں سیکڑوں افراد زخمی بھی ہوئے ہیں، جن میں 540 کی حالت نازک ہے۔ امدادی کاموں کا سلسلہ بدستور جاری ہے اور 29 لاپتہ افراد کی تلاش کا عمل بھی جاری ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ دیگر دیگر علاقوں میں بھی تباہی ہوئی ہے، تاہم ان کے بارے میں تاحال علم نہیں ہو سکا ہے۔ اسی لیے حکام نے ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔ ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق اسپتالوں میں سیکڑوں زخمیوں کو لایا گیا ہے
جب کہ ڈاکٹروں کی کمی ہے۔ حکام نے ہفتے کے روز بتایا کہ جمعہ کے دن آنے والے زلزلے اور سونامی نے انڈونیشیا کے 2 مرکزی شہروں میں تباہی مچا دی ہے۔ تازہ اطلاعات کے مطابق ان دونوں شہروں میں کم از کم 400 افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہو گئے ہیں۔ 7.7 شدت کے زلزلے کے بعد سونامی کی لہریں 5 فٹ تک اٹھیں، جس کی وجہ سے ساڑھے 3 لاکھ آبادی والے شہر پالو میں بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی ہے۔ طبی ذرائع نے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔ نیوز ایجنسی اے پی کے مطابق صوبہ سولاویسی کے شہر پالو میں اسپتال زخمیوں سے بھر چکے ہیں جب کہ وہاں ڈاکٹروں کی کمی ہے۔ متاثرہ علاقوں میں سڑکوں کے ساتھ مواصلات کا نظام تباہ ہو کر رہ گیا ہے جب کہ ان علاقوں میں لوگوں تک رسائی حاصل کرنا انتہائی مشکل ہو چکا ہے۔ انڈونیشیا میں قدرتی آفات سے نمٹنے والے ادارے کے ایک ترجمان سٹوپو پورو نوگورو کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ جس وقت یہ سونامی آیا، اس وقت پالو میں ایک بیچ فیسٹیول جاری تھا اور اس فیسٹیول میں شریک سیکڑوں افراد کی قسمت کے بارے میں کچھ پتا نہیں ہے۔ اسی طرح اس صوبے کے ڈونگلہ شہر میں بھی تباہی پھیلی ہے اور اس شہر کی آبادی 3 لاکھ کے قریب ہے۔ اس شہر سے گزرنے والے ایک دریا کا پْل ٹوٹ گیا تھا اور پانی آبادی میں داخل ہو گیا تھا۔ انڈونیشیا کے ایک مقامی ٹیلی وژن پر اسمارٹ فون سے بنائی گئی ایک وڈیو دکھائی گئی ہے، جس میں پالو شہر میں بلند لہروں کے بعد لوگوں کو چیخیں مارتے اور افراتفری میں بھاگتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ اقوام متحدہ کے ایک ترجمان کے مطابق وہ انڈونیشی حکام کے ساتھ رابطے میں اور کسی بھی ہنگامی مدد کے لیے تیار ہیں۔
انڈونیشیا ؍ ہلاکتیں

Print Friendly, PDF & Email
حصہ