غزہ: شہدا کے جنازوں میں جم غفیر امڈ آیا‘ ہر آنکھ اشک بار

231
غزہ: اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والے فلسطینیوں کے جنازے میں ہزاروں افراد شریک ہیں‘ اہل خانہ غم سے نڈھال ہیں
غزہ: اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والے فلسطینیوں کے جنازے میں ہزاروں افراد شریک ہیں‘ اہل خانہ غم سے نڈھال ہیں

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی ریاستی دہشت گردی سے جمعہ کے روز 7 فلسطینی شہید اور 500 سے زائد زخمی ہوگئے۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے 14 سالہ محمد الحوم اور 18 برس کے ایاد خلیل الشاعر، 24 سالہ محمد بسام شخصہ،18 سالہ محمد علی محمد انشاصی،26 سالہ محمد اشرف العواودہ قابض اسرائیلی فوج کی جانب سے براہ راست فائرنگ کا نشانہ بنے اور شہید ہوگئے۔ مقامی ذرائع کے مطابق ہفتے کے روز ساتوں فلسطینی نوجوانوں کی نماز جنازہ کے بعد تدفین کردی گئی۔ اس موقع پر سیکڑوں فلسطینی شہری جنازے میں شریک تھے اور صہیونی دہشت گردی کے خلاف نعرے بازی کررہے تھے۔ ذرائع کے مطابق شہریوں کی بڑی تعداد شہدا کے اہل خانہ کے ساتھ موجود رہی۔ اس موقع مختلف طبقہ فکر کے افراد کی بڑی تعداد سمیت فلسطینی سماجی تنظیموں کی جانب سے اسرائیلی فوج کی نہتے فلسطینیوں پر براہ راست فائرنگ کی شدید مذمت کرتے
ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا گیا کہ فلسطینیوں کی حق واپسی مظاہروں سمیت دیگر ریلیوں پر قابض فوج کے اہلکاروں کی براہ راست فائرنگ، گرفتاریوں اور بچوں و خواتین پر تشدد کا نوٹس لیں۔ دوسری جانب وزارت صحت کے ترجمان اشرف القدرہ نے غیر ملکی خبر رساں ادارے کو بتایا کہ 2 مزید فلسطینی اسرائیلی فائرنگ کا نشانہ بنے ہیں، تاہم فوری طور پر ان کی شناخت نہیں ہو سکی۔ زخمی ہونے والوں میں 35 بچے، 4 خواتین، 4 امدادی کارکن اور 2 صحافی بھی شامل ہیں۔ اسرائیل نے دعویٰ کیا کہ ان کے فوجیوں نے طے شدہ ضابطے کے مطابق مظاہرین کو روکنے کی کوشش کی، تاہم اسرائیلی فوج نے مخصوص حالات کی تفصیل بتانے سے گریز کیا۔ واضح رہے کہ اس سال مارچ سے غزہ کے باشندوں بالخصوص اور فلسطینی بالعموم ہر جمعہ کے روز احتجاجی ریلیاں نکال رہے ہیں۔ غزہ کی سرحد پر ہونے والے ان مظاہروں پر اسرائیلی فائرنگ سے اب تک 191 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ شہید ہونے والوں کی محدود تعداد ایسے افراد کی ہے کہ جو مظاہرین پر اسرائیلی فضائی حملوں اور ٹینکوں کی گولا باری میں جان کی بازی ہار گئے۔ گزشتہ روز ہونے والی دہشت گردی کی صفائی دیتے ہوئے اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ اس نے مظاہرین کی جانب سے پتھراؤ اور گھریلو ساختہ بموں کے حملوں کے جواب میں فائرنگ کی۔ اسرائیلی فوج نے مظاہرین کے پتھراؤ کے جواب میں غزہ پر فضائی حملہ کرنے کابھی اعتراف کیا ہے۔ غزہ کے محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ جمعہ کے روز سرحد پر 5 مختلف مقامات پر اسرائیلی فوج کے ساتھ جھڑپوں میں 505 افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں سے 89 کو گولیاں لگی ہیں۔
غزہ ؍ جنازے

Print Friendly, PDF & Email
حصہ