امریکا: دنیا کا مہنگا ترین جنگی طیارہ ایف 35 گر کر تباہ

139
جنوبی کیرولائنا: ایف 35 طیارے کی تباہی کے بعد جائے وقوع سے دھواں اٹھ رہا ہے
جنوبی کیرولائنا: ایف 35 طیارے کی تباہی کے بعد جائے وقوع سے دھواں اٹھ رہا ہے

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی فوج کو اپنے انتہائی مہنگے ایف۔35 فائٹر جیٹ پروگرام میں پہلا نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق گزشتہ روز ایک ایف ۔ 35 بی جیٹ جنوبی کیرولائنا میں گر کر تباہ ہو گیا۔ متعلقہ امریکی ادارے نے وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ پائلٹ بحفاظت طیارے سے پیراشوٹ کے ذریعے نکلنے میں کامیاب رہا تاہم حادثے کے معاملے کی تہقیقات جاری ہے۔ ایف ۔ 35 دنیا میں اپنی قسم کا سب سے وسیع اور مہنگا اسلحہ جاتی پروگرام ہے۔ عالمی سطح پر اس کے 3 ہزار طیارے فروخت کرنے کا منصوبہ ہے اور یہ پروگرام 30 سے 40 سال تک جاری رہے گا تاہم اس پروگرام کو اس
کی قیمت اور جنگی صلاحیت کی بنیاد پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ جو جیٹ طیارہ حادثے کا شکار ہوا ہے اس کی قیمت 10 کروڑ ڈالر بتائی جا رہی ہے۔ خبررساں ادارے رائٹرز کے مطابق جمعہ کے روز پینٹاگون کے ایک نئے معاہدے میں بتایا گیا ہے کہ 141 ایف ۔ 35 جیٹ طیاروں کی قیمت تقریباً 9 کروڑ ڈالر فی طیارہ ہے۔ یہ ماڈل ایف ۔ 35 طیاروں کی 3 اقسام میں سے ایک قسم ہے جو کہ اپنے کام پر مامور ہے۔ جمعرات کو امریکا نے ایف ۔ 35 بی کا افغانستان میں طالبان کے خلاف پہلی بار استعمال کیا۔ اس سے 4 ماہ قبل اسرائیلی فوج نے کہا تھا کہ اس نے ایف ۔ 35 اے کا 2 مختلف حملوں میں استعمال کیا تھا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کئی بار ایف ۔ 35 جیٹ طیاروں کی یہ کہتے ہوئے تعریف کی ہے کہ دشمن اسے دیکھ نہیں سکتا۔
امریکا ؍ طیارہ تباہ

Print Friendly, PDF & Email
حصہ