جماعت اسلامی نے ملکی نظام کی تبدیلی کے لیے 10سالہ منصوبہ تیار کرلیا

202
لاہور، جماعت اسلامی کے نائب امیر راشد نسیم کی زیر صدارت منصوبہ عمل کمیٹی کے اجلاس میں اظہر اقبال،وقاص جعفری،زبیر گوندل،ڈاکٹر عبدالواسع و دیگر شریک ہیں
لاہور، جماعت اسلامی کے نائب امیر راشد نسیم کی زیر صدارت منصوبہ عمل کمیٹی کے اجلاس میں اظہر اقبال،وقاص جعفری،زبیر گوندل،ڈاکٹر عبدالواسع و دیگر شریک ہیں

لاہور(نمائندہ جسارت) جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیراور صدر مرکزی منصوبہ عمل کمیٹی راشد نسیم نے منصورہ میں اپنی زیر صدارت ہونے والے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ عوام کے ذریعے ملکی نظام کی تبدیلی کے لیے جماعت اسلامی نے10 سالہ منصوبہ بنایا ہے جس میں ملک کی نظریاتی و دفاعی سرحدوں کی حفاظت سے لے کر عام آدمی کو درپیش مسائل کا حل موجود ہے ۔ ہم پاکستان کی اسلامی شناخت کو بحال کریں گے اور اقوا م عالم میں ملک و قوم کے وقار کو بلند کرنے کے لیے باہمی احترام پر مبنی خارجہ پالیسی تشکیل دیں گے ۔جماعت اسلامی نے مشاورت کے عمل کو وسیع کرنے اور عام آدمی کو اس مشاورتی عمل میں شامل کرنے کے لیے طویل المعیاد منصوبہ بندی کی ہے ۔ ہم اپنے بہی خواہوں کو آن بورڈ لیں گے ۔ لوگ آئیں ہمیں اپنے مشوروں سے نوازیں ۔ہماری خامیوں کی نشاندہی کریں ۔ ہم تعمیری تنقید کو ناصرف برداشت کرتے ہیں بلکہ اس کی حوصلہ افزائی اور قدر بھی کرتے ہیں ۔راشد نسیم نے کہاکہ اس وقت حکومت کا جو تجربہ کیا جارہاہے ، ہم چاہتے ہیں کہ وہ کامیاب ہومگر حکومت کی اب تک کی کارکردگی سے لگتا نہیں کہ کوئی تبدیلی آئے گی۔ یہ سارے پرانی ٹیم کے لوگ ہیں جو پرویز مشرف ، زرداری اور نوازشریف کے بھی ساتھ رہے ہیں ۔ 70 سال کی ناکامیوں کے بعد یہ طے ہوچکاہے اور عوام بھی سمجھ چکے ہیں کہ ملکی مسائل کا حل صرف جماعت اسلامی کے پاس ہے ۔ اجلاس میں اظہر اقبال حسن، سید وقاص انجم جعفری ، ذکر اللہ مجاہد ، شیخ عثمان فاروق ، ممتاز حسین سہتو ،ڈاکٹر عبدالواسع شاکر ،صابر حسین اعوان اور مولانا عبدالکبیر شاکر نے شرکت کی ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ