سانحہ ماڈل ٹاؤن ،شریف برادران سمیت 12 شخصیات کی طلبی کی درخواست مسترد

183
سانحہ ماڈل ٹاؤن ،شریف برادران سمیت 12 شخصیات کی طلبی کی درخواست مسترد
سانحہ ماڈل ٹاؤن ،شریف برادران سمیت 12 شخصیات کی طلبی کی درخواست مسترد

لاہور(نمائندہ جسارت)لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ٹرائل کورٹ فیصلے کے خلاف سابق وزیراعظم نواز شریف، سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور دیگر وزرا کی طلبی سے متعلق عوامی تحریک کی درخواست خارج کر دی۔بدھ کوجسٹس قاسم خان کی سربراہی میں لاہور ہائی کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے پاکستان عوامی تحریک کے رہنما جواد حامد کی جانب سے دائر درخواست پر محفوظ فیصلہ سنایا ۔ فیصلہ 2 ایک کے تناسب سے سنایا گیا ۔ بینچ کے سربراہ نے فیصلے میں اختلافی نوٹ لکھا ہے ۔ جواد حامد کی جانب سے ٹرائل کورٹ کے فیصلے کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں اپیل دائر کی گئی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ ٹرائل کورٹ نے حقائق کے برعکس فیصلہ سناتے ہوئے استغاثہ کیس میں نواز شریف اور شہباز شریف سمیت 12 سابق وفاقی اور صوبائی وزرا کو طلب نہیں کیا لہٰذا ان کی طلبی کے احکامات جاری کیے جائیں ۔ عدالت نے 27 جون کو فریقین کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا۔ عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے ٹرائل کورٹ کے فیصلے کو درست قرار دے دیا ہے۔ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس قاسم خان ، جسٹس سردار احمد نعیم اور جسٹس عالیہ نیلم پر مشتمل فل بینچ نے مختصر فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف ، شہباز شریف ، خواجہ محمد سعد رفیق ، پرویز رشید ، خواجہ محمد آصف ، رانا ثنا اللہ خان سمیت وزیر اعلیٰ پنجاب کے سابق پرنسپل سیکرٹری توقیر شاہ اور سابق ہوم سیکرٹری اعظم سلیمان کو استغاثہ کیس میں بے قصور قرار دیتے ہوئے پاکستان عوامی تحریک کی اپیل خارج کر دی ۔ عدالت نے سابق آئی جی پنجاب پولیس مشتاق احمد سکھیرا کی جانب سے ٹرائل کورٹ میں طلب کیے جانے کے خلاف دائر درخواست خارج کر دی ہے ۔ عدالت نے مشتاق سکھیرا کو حکم دیا ہے کہ وہ ٹرائل کورٹ میں پیش ہوں اور اپنی بے گناہی ثابت کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ