تمام ایل این جی معاہدے سامنے لانے کا فیصلہ

158
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس کی صدارت کررہے ہیں

اسلام آباد (خبرایجنسیاں) مشترکہ مفادات کونسل نے تمام ایل این جی معاہدے سامنے لانے کا فیصلہ کر لیا۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت 4 گھنٹے جاری رہنے والے اجلاس میں چاروں وزارئے اعلیٰ اور وفاقی کابینہ کے ارکان نے شرکت کی۔جس میں وفاق اور صوبوں کے درمیان 18ویں ترمیم کے بعد تقسیم شدہ امور پر تفصیلی بات چیت ہوئی جب کہ وزرائے اعلیٰ نے مختلف تجاویز اور مسائل سے وزیراعظم کو آگاہ کیا۔اجلاس میں پیٹرولیم پالیسی 2012ء کے معاملے پر صوبوں سے تجاویز طلب کی
گئیں۔اعلامیے کے مطابق مشترکہ مفادات کونسل نے ہائر ایجوکیشن کمیشن کو تعلیمی اداروں کے معیار اور یکساں نصاب کے لیے لائحہ عمل وضع کرنے کی ہدایت جاری کر دی ۔ اس کے علاوہ پن بجلی خالص منافع کے سلسلے میں اے جی این قاضی فارمولے پر عملدرآمد پر اتفاق کیا گیا۔اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ای او بی آئی اور ورکرز ویلفیئر فنڈ کے امور پر غور کے لیے وزیر بین الصوبائی رابطہ کی سربراہی میں کمیٹی قائم کر دی گئی ہے جو آئندہ ایک ماہ میں اپنی سفارشات مشترکہ مفادات کونسل کو پیش کرے گی۔اجلاس میں وزیراعظم نے 7 اکتوبر سے قومی صفائی مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا، صوبائی حکومتوں کی جانب سے اس مہم میں بھرپور حصہ لینے کی یقین دہانی کرائی گئی۔ذرائع کے مطابق کراچی کو 1200 کیوسک اضافی پانی دینے کے معاملے پر فیصلہ نہ ہو سکا جس کے بعد اسے واٹر کونسل کو بھجوانے کا فیصلہ کرتے ہوئے حکومت سندھ اور وزارت آبی وسائل سے تجاویز بھی طلب کر لی گئی ہیں۔اس موقع پر عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم تمام صوبوں کو ساتھ لے کر چلنا چاہتے ہیں، وفاق اور صوبوں کے تمام مسائل اتفاق رائے سے حل کریں گے،صوبوں کو عملی طور پر خود مختار بنانا چاہتے ہیں تاکہ ترقی کے ثمرات ہر شخص تک پہنچیں ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ