مفکر اسلام ،بانی جماعت اسلامی مولانا سید ابو الااعلیٰ موددیؒ کو دنیا سے بچھڑے 39 برس بیت گئے

369

لاہور:عالم اسلام کی نابغہ روزگار شخصیت ،مفکر اسلام ،بانی جماعت اسلامی مولانا سید ابو الااعلیٰ موددیؒ کو دنیا سے بچھڑے 39 برس بیت گئے، ان کی 39 ویں برسی آج ملک بھر میں انتہائی عقیدت و احترام سے منائی جارہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق عالم اسلام کے عظیم مفکر ،دانشور اور دنیا بھر کی موجودہ اسلامی تحریکوں میں اپنی لازوال تحریروں سے انقلاب کی روح پھونکنے والے 20ویں صدی کے نامور اسلامی رہنما مولانا سید ابو الاعلی مودودیؒ کے انتقال کو 39 برس بیت گئے۔

بانی جماعت اسلامی سید ابوالاعلیٰ مودودیؒ کی زندگی اور جدوجہد پر طائرانہ نظر ڈالتے ہیں ، 25 ستمبر 1903 ءکو حیدر آباد دکن کے شہر اورنگ آباد میں پیدا ہوئے اور ابتدائی تعلیم بھی وہیں سے حاصل کی۔

انہوں نے  1918 ءمیں صرف پندرہ سال کی عمر میں صحافت کا آغاز ” اخبار مدینہ “ سے کیا ۔ 1920 ءمیں مولانا مودودیؒ کے سر سے والد کا سایہ اٹھ گیا۔ 1925 ءمیں روزنامہ ” الجمعیۃ “ دہلی کی ادارت سنبھال لی جو چار سال تک جاری رہی ۔

مولانا مودودیؒ نے  1932 ءمیں حیدر آباد دکن سے ماہنامہ ” ترجمان القرآن “ کا اجرا کیا ۔انہوں نے  26 اگست 1941 ءکو لاہور میں جماعت اسلامی کی بنیاد رکھی۔ 11 مئی 1953ء کو فوجی عدالت نے مولانا مودودیؒ  کو سزائے موت سنا دی ۔

1963 ءمیں لاہور میں مولانا سید مودودیؒ پر قاتلانہ حملہ ہوا ۔ انہوں نے 1967 ءمیں بحالی جمہوریت کے لیے دوسری جماعتوں سے مل کر تحریک جمہوریت پاکستان ( پی ڈی ایم) کی تشکیل کی ۔

 1970 ءمیں مولانا مودودیؒ کے اعلان پر بے مثال یوم شوکت اسلام منایا گیا ۔ 1973 ءمیں 31 سال تک تحریک کی رہنمائی کرنے کے بعد مسلسل علالت کی وجہ سے جماعت اسلامی کی امارت سے معذرت کر لی ۔

1979 ءمیں علاج کی غرض سے مولانا مودودیؒ  امریکہ گئے۔ 22 ستمبر 1979 کو بفیلو ہسپتال امریکہ میں انتقال کر گئے،انہیں لاہور کے علاقے اچھرہ میں سپرد خاک کیا گیا ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ