۔8محرم الحرم کے جلوس کیلیے 5500سیکورٹی اہلکار تعینات

66
محرم الحرام کا جلوس سخت حفاظتی حصار میں ایم اے جناح روڈ سے گزر رہا ہے

کراچی( اسٹاف رپورٹر)8 محرم الحرام کے حوالے سے نکالا جانے والا جلوس اپنے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا کھارادر میں اختتام پذیر ہو گیا ،جلوس کے موقع پر سیکورٹی کے سخت ترین اقدامات کیے گئے تھے۔کراچی میں مرکزی جلوس کی سیکورٹی کے لیے 5 ہزار 500سے زائد اہلکارتعینات کیے گئے تھے، جلوس کے راستوں پرتمام دکانوں، مارکیٹوں کے شٹراورگیٹ سیل کردیے گئے ،امام بارگاہوں کی سیکورٹی کیلیے پولیس کی اضافی نفری تعینات کی گئی ہے ۔تفصیلات کے مطابق 8 محرم الحرام نشتر پارک میں مرکزی مجلس ہوئی اور شہدائے کربلا کے کردار پر روشنی ڈالی ،8محرم الحرام کے جلوسوں کے باعث سیکورٹی انتہائی سخت کی گئی ، مرکزی جلوس کے سلسلے میں ایم اے جناح روڈ کو کنٹینرز لگا کر سیل کر دیا گیا ہے، 8 محرم الحرام کا مرکزی جلوس دوپہر ایک بجے نشترپارک سے برآمد ہوا جو نشترپارک، سر شاہ نواز بھٹو روڈ، محفل شاہ خراساں، ایم اے جناح روڈ، منسفیلڈ اسٹریٹ، پریڈی اسٹریٹ، دوبارہ ایم اے جناح روڈ، بابائے اردو روڈ، نشتر روڈ، بارہ امام ، الطاف حسین روڈ(پرانا نیپئر روڈ)، ایم اے جناح روڈ، بولٹن مارکیٹ، بمبئی بازار، نواب محبت خانجی روڈ سے حسینیان ایرانیان امام بارگاہ ایرانیان کھارادر پراختتام پذیر ہوا، جلوس کی گزرگاہ پر سبیلیں قائم تھیں ، عزاداروں میں شربت اور لنگر تقسیم کیا گیا، جلوس کے سلسلے میں ایم اے جناح روڈ کو کنٹینرز لگا کر سیل کر دیا گیا ہے،کراچی میں مرکزی جلوس کی سیکورٹی کے لیے 5 ہزار 500سے زائد اہلکارتعینات کیے گئے تھے، ،مجالس و جلوسوں کے آگے اور پیچھے سیکورٹی کیلیے پولیس کے دستے تعینات رہیں گے، جلوسوں کی گزر گاہوں میں واقع اسکولوں کو بند رکھا گیا ہے، سیکورٹی کو مزید مؤثر بنانے کے لیے 200 سے زائد سی سی ٹی کیمرے بھی نصب کیے گئے تھے ، جلوس کے راستوں کو بم ڈسپوزل اسکواڈ نے چیکنگ کے بعد کلیئر کیا جس کے بعد جلوس کو جانے کی اجازت دی گئی تھی ، جلوس کے راستے میں آنے والی بلند ترین عمارتوں میں پولیس کے شارپ شوٹر تعینات کیے گئے تھے ، جلوس میں شرکا راستے بھر نوحہ خوانی کرتے رہے۔ اس موقع پر پولیس کے علاوہ رینجرز اہلکاروں نے بھی خدمات انجام دیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ