غزہ پر اسرائیلی جارحیت‘ صحافی سمیت کئی فلسطینی زخمی

115
غزہ: اسرائیل سے متصل سرحد کے بعد ساحل پر بھی محصور فلسطینی ٹائر جلا کر احتجاج کررہے ہیں‘ خواتین بھی پیش پیش ہیں
غزہ: اسرائیل سے متصل سرحد کے بعد ساحل پر بھی محصور فلسطینی ٹائر جلا کر احتجاج کررہے ہیں‘ خواتین بھی پیش پیش ہیں

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی دہشت گردی کے مختلف واقعات میں ایک صحافی سمیت کئی فلسطینی شہری زخمی ہوگئے۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق اتوار کی شام اسرائیلی فوج نے جنوبی غزہ میں رفح کے مقام پر خان یونس شہر میں فلسطینی مظاہرین پرفائرنگ کی جس کے نتیجے میں 3 فلسطینی زخمی ہوگئے۔ اُدھر وسطی غزہ میں البریج کیمپ کے قریب اسرائیلی فوج کے بغیر پائلٹ ڈرون طیارے نے موٹر سائیکل سواروں کونشانہ بنایا جس کے نتیجے میں 2 فلسطینی نوجوان زخمی ہوگئے۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی فوج نے مشرقی خان یونس میں الخزعہ کے مقام پر حق واپسی کیمپوں میں احتجاج کرنے والے فلسطینیوں پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں کئی فلسطینی زخمی ہوگئے۔ زخمی ہونے والے 3 فلسطینیوں کو یوسف النجار اسپتال منتقل کیا یا ہے۔ زخمی ہونے والے ایک شہری کی حالت تشویشناک بیان کی جاتی ہے۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ اسرائیلی فوج کی جانب سے فلسطینی مظاہرین پر 3 صوتی بم بھی پھینکے گئے۔ فلسطینی ذرائع کے مطابق زخمی ہونے والوں میں ایک صحافی بھی شامل ہے۔ دوسری جانب اسرائیل کے وزیر داخلہ برائے سلامتی گیلاد اردان نے اسلامی تحریک مزاحمت حماس کی پوری قیادت کو شہید کرنے کی دھمکی دی ہے۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی وزیر کی طرف سے یہ دھمکی آمیز بیان گزشتہ روز سامنے آیا۔ انہوں نے کہا کہ اگرغزہ کی مشرقی سرحد پر فلسطینیوں کے حق واپسی کے لیے پر تشدد مظاہرے دوبارہ شروع ہوتے ہیں تو حماس کی پوری قیادت کو شہید کیا جا سکتا ہے۔ عبرانی ٹی وی پر نشر بیان میں گیلاد اردان کا کہنا تھا کہ اگر غزہ کی سرحد پر کشیدگی بڑھتی ہے تو اس کی ذمے داری حماس پر عائد کی جائے گی۔ ایسی صورت میں ہماری فوج حماس کی قیادت کو قاتلانہ حملوں میں شہید کرنے کی پالیسی دوبارہ اختیار کرسکتی ہے۔ اُدھر اسرائیلی پارلیمان کے ایک رکن حاییم یلین نے حال ہی میں فوج سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ حماس کو غزہ میں جنگ بندی معاہدے پر مجبور کرنے کے لیے حماس کے عسکری ونگ عزالدین القسام بریگیڈ کی قیادت کو ٹارگٹ کلنگ کانشانہ بنانا شروع کرے۔ دوسری جانب ا قوام متحدہ کی طرف سے جاری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ فلسطین میں بیروزگاری کی شرح دنیا کے دیگر خطوں کی نسبت سب سے زیادہ ہے۔ اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے تجارت وترقی (انکٹاڈ)کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ فلسطین کا گنجان آباد علاقہ غزہ بیروزگاری کے اعتبار سے انتہائی خطرناک ہے۔ ماضی کی نسبت غزہ میں بیروزگاری نہ صرف اپنے عروج پر ہے بلکہ پورا فلسطینی بیروزگاری کے اعتبار سے دنیا بھر میں سب سے آگے ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ غزہ میں بیروزگاری کی وجہ سے ترقیاتی منصوبے جمود کا شکار ہیں۔ غزہ میں تعمیر وترقی کا عمل منجمد ہوچکا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ