جیکب آباد میں ڈاکٹروں پرتشدد کا فوری نوٹس لینے کامطالبہ

33

کراچی (اسٹاف رپورٹر) ڈاکٹروں پر جسمانی تشدد تشویش ناک حد تک بڑھتا جا رہا ہے، ڈاکٹرز عدم تحفظ کا شکار ہو رہے ہیں جس کی وجہ سے علاج معالجے کی فراہمی متاثر ہو رہی ہے، اعلیٰ حکام ضلع تھل جیکب آباد میں ہونے والے ڈاکٹرز پر تشدد کا فوری نوٹس لے کر ذمے داران کو کیفر کردار تک پہنچائیں۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کراچی کے جنرل سیکرٹری ڈاکٹر عبدالغفور شورو نے اپنے ایک اعلامیے میں کیا۔ ڈاکٹر عبالغفور شورو کا مزید کہنا تھا کہ ڈاکٹرز پر جسمانی تشدد کا رجحان سرکاری اسپتالوں کے علاوہ نجی اسپتالوں میں بھی بڑھتا جا رہا ہے اور مریضوں کے لواحقین عدم برداشت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ڈاکٹرز پر تشدد کرنے کے علاوہ اسپتالوں میں توڑ پھوڑ بھی کرتے ہیں جس کی وجہ سے ڈاکٹرز ذہنی دباؤ اور عدم تحفظ کا شکار ہیں اور وہ اپنی علاج معالجے کی خدمات بہتر انداز میں ادا نہیں کر پا رہے ہیں۔ ڈاکٹر عبدالغفور شورو کا مزید کہنا تھا کہ طب ایک مقدس پیشہ ہے اور ڈاکٹرز کو مسیحا کہا جاتا ہے اور ان کی تربیت ہی اس بنیاد پر کی جاتی ہے کہ وہ بلاتخصیص ہر ایک کی جان بچانے کی اپنی صلاحیت و قابلیت کی آخری حد تک کوشش کریں ۔دانستہ کوئی ڈاکٹر کسی مریض کو غلط دوا نہیں دیتا اور نہ ہی آپریشن کرتا ہے بلکہ نادانستگی میں انسانی فطرت کے مطابق ہو سکتا ہے۔ ڈاکٹر عبدالغفور شورو نے اعلیٰ حکام و ارباب اختیار سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر ڈاکٹرز کے تحفظ کو یقینی بنائیں تاکہ وہ اپنی تمام تر صلاحیتیں علاج معالجے کی بہترین سہولتوں کی فراہمی میں صرف کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس جیکب آباد میں ہونے والے ڈاکٹرز پر تشدد کے واقعے کے ذمے داران کے خلاف کارروائی کرکے انہیں ان کے انجام تک پہنچائیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.