امریکا: طوفان کے پیش نظر 10 لاکھ افراد کی منتقلی

44

رالی (انٹرنیشنل ڈیسک) فلورنس نامی انتہائی طاقتور سمندری طوفان امریکا کے مشرقی ساحل کی طرف بڑھ رہا ہے۔ جس کے بعد حکام نے ممکنہ طور پر متاثر ہونے والے علاقوں سے 10 لاکھ افراد کو نکالنے کا فیصلہ کیا ہے۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق چار درجے کے اس طوفان کے ساتھ 220کلومیٹر فی گھنٹہ تک کی تیز رفتار ہوائیں بھی شامل ہیں۔ یہ طوفان امریکا کے مشرقی ساحلی علاقے کی طرف بڑھ رہا ہے اور اسی باعث لوگوں نے خطرے کے شکار علاقوں سے نکلنا شروع کر دیا ہے ۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے ایک ٹویٹ میں لوگوں کو متنبہ کیا کہ مشرقی ساحل سے ٹکرانے والا یہ گزشتہ کئی برسوں کا بدترین طوفان ہے۔ شہری محتاط اور محفوظ رہیں۔ امریکا کی جنوبی ریاست کیرولائنا کے گورنر ہینری میکماسٹر نے ریاست کے مشرقی ساحلی علاقوں سے تقریباً 10 لاکھ لوگوں کو وہاں سے نکلنے کا حکم دیا ہے ۔ یہ طوفان ممکنہ طور پر جمعرات 13 ستمبر کو ساحلی علاقوں سے ٹکرائے گا۔ اس ریاست کی 46 میں سے 26 کاؤنٹیز کے اسکولوں کو آج منگل کے روز سے بند کر دیا گیا ہے ۔ ہمسایہ ریاست شمالی کیرولینا کے گورنر نے بھی ممکنہ طور پر طوفان کی زد میں آنے والے علاقوں سے لوگوں کو نکالنے کا حکم دیا ہے جبکہ ریاست ورجینیا میں اسی سبب ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ