احسان مانی کی سربراہی میں کھیلوں سے متعلق ٹاسک فورس تشکیل 

78

اسلام آباد (جسارت نیوز) وزیراعظم عمران خان نے کھیلوں کی تنظیموں کی کارگردگی کا جائزہ لینے اورکھیلوں کے شعبے میں انتظامی اصلاحات کیلیے سفارشات مرتب کرنے کے سلسلے میں ٹاسک فورس کی تشکیل کے احکامات جاری کیے ہیں۔انہوں نے یہ احکامات منگل کو وزیراعظم آفس میں بین الصوبائی رابطہ کی وزارت کی ایک بریفنگ کی صدارت کرتے ہوئے جاری کیے۔وفاقی وزیربین الصوبائی رابطہ ڈاکٹرفہمیدہ مرزا، چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ احسان مانی اوردیگرسینئر سرکاری اہلکاروں نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔ وزارت بین الصوبائی رابطہ کے سیکرٹری جمیل احمد نے وزیراعظم کو وزارت اوراس سے منسلک محکموں بشمول پاکستان اسپورٹس بورڈ، پاکستان کرکٹ بورڈ، انٹربورڈ کمیٹی آف چیئرمین، پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل ، نیشنل اکیڈمی آف پرفارمنس آرٹس، اورنیشنل انٹرن شپ پروگرام کی کارگردگی اورکام کے بارے میں بریفنگ دی۔وزارت کیلئے بجٹ کی تخصیص اورملک میں کھیلوں کے فروغ کیلئے مختلف ترقیاتی سکیموں پر بحث ومباحثہ کے دوران وزیراعظم کوآگاہ کیا گیا کہ مختلف اہم منصوبے، جن کی مالیت اربوں روپے ہیں، 2008ء سے نامکمل ہیں اوران سکیموں کے فزیکل انفراسٹرکچر میں معمولی پیش رفت ہوسکی ہے۔وزیراعظم نے ہدایت کی کہ تمام زیرالتواء منصوبوں کاازسرنوجائزہ لیا جائے تاکہ ان کی افادیت اورابھی تک عدم تکمیل کی وجوہات کا تعین کیا جاسکے۔ملک میں مختلف اسپورٹس فیڈریشنز اورایسوسی ایشنز کی کارگردگی پرغوروغوص کے دوران یہ فیصلہ کیا گیا کہ ملک میں کھیلوں کی مختلف فیڈریشنز اورایسوسی ایشن کی بھرمار کے باجود عدم کارگردگی کا نوٹس لیا جائے گا کیونکہ عدم کارگردگی کی وجہ سے کھیلوں کا شعبہ مختلف قومی اوربین الاقوامی ذرائع بشمول وفاقی اورصوبائی حکومتوں کی جانب سے فنڈزملنے کے باوجود مجموعی طورپر زبوں حالی کاشکارہے حالانکہ اوران کے عہدیدار ایک دہائی سے زیادہ عرصہ تک اپنے عہدوں پر براجمان رہے ہیں۔اس کا مقصد بنیادی ڈھانچے سے لیکر انتظامی ڈھانچے اورآپریٹنگ نظام تک کھیلوں کے شعبے کے مجموعی حالت زارکو مکمل طورپر بہتربنانا ہے جس میں میرٹ، قابلیت، شفافیت اورکارگردگی کو اولیت دی جائیگی تاکہ پاکستان ، جو200 ملین سے زائد آبادی والا ملک ہے اورجس کی 60 فیصد آبادی 30 سال سے کم عمر کے افراد پر مشتمل ہے کھیلوں کی دنیاء پر حکمرانی کے قابل ہوسکے۔اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ کھیلوں کے شعبے سے متعلق حکومتی اداروں کوبہتربنایا جائے گا اوران کی ری اسٹرکچرنگ کی جائیگی کیونکہ یہ ادارے وہ مقاصد حاصل کرنے میں ناکام ہوچکے ہیں جس مقصد کیلئے ان کاقیام عمل میں لایاگیا تھا۔ اجلاس میں احسان مانی کی قیادت میں کھیلوں سے متعلق ٹاسک فورس کے قیام کا فیصلہ کیا گیا، ٹاسک فورس کھیلوں کے تمام اداروں کی کارگردگی کا جائزہ لیں گی اورمختلف وسائل سے حاصل فنڈز کے موثرہونے اوراس کے استعمال کا تجزیہ کریں گی، ٹاسک فورس قومی اوربین الاقوامی سطح پر کھیلوں کے فروغ کیلئے مختلف انتظامی اصلاحات کیلئے سفارشات بھی مرتب کریں گی ۔ وزیراعظم عمران خان نے ہدایت کی کہ پہلے قدم کے طورپرکھیلوں کے میدانوں میں اضافہ پرتوجہ مرکوزکی جائے تاکہ نوجوانوں کو اپنے ٹیلنٹ کے اظہار اوراپنا لوہامنوانے کے مواقع فراہم کی جاسکے۔نوجوانوں سے متعلق پروگراموں پرپیش رفت کے جائزہ کے دوران بتایا گیا کہ نیشنل انٹرن شپ پروگرام کے تحت ایک ارب روپے سے زائد کے فنڈز مشاہروں کی مد میں واجب الادا ہے۔ وزیراعظم نے ہدایت کی کہ قومی انٹرن شپ پروگرام جیسے اقدامات کو مزیدمضبوط بنایاجائے اورنوجوان گریجویٹس کیلئے زیادہ سے زیادہ مواقع فراہم کئے جائے تاکہ وہ مختلف شعبوں میں عملی تربیت حاصل کرسکے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ