35

کر ا چی( اسٹاف رپورٹر)فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری(ایف پی سی سی آئی) کے نائب صدر طارق حلیم نے کہا ہے کہ گوادر بندرگاہ تجارتی مواقع اورپاکستان کی معاشی تر قی کے حصول کے لیے معاشی اثاثہ کی صلاحیت رکھتا ہے، اس خطہ میں سی پیک کے حوالے سے65بلین کا یو ایس اے کا پروجیکٹ ہے جوBRIکی فلیگ شپ کا پروجیکٹ بھی ہے،گوادر میں فیڈریشن چیمبر آف کامرس کے آفس کے قیام اصل کامقصد کاروباری اداروں کی معاونت کرنا اور اس بندرگاہ گوادر شہر میں کمرشل سرگرمیوں میں اضا فہ کرنا ہے اور خا ص طور پر سی پیک کے حوالے سے مقامی بزنس کمیونٹی کی طو یل ترین مطالبہ کے بعد اس کا قیام عمل میں لایا گیاہے۔وہ ریجنل آفس کی تقریب میں چیئرمینCOPHS ژیانگ بازونگ (Zhang Baozhong) کے ساتھ معاہدے کے موقع پر خطاب کررہے تھے۔ طارق حلیم نے کہا کہ پاکستان کی معاشی تر قی میں بزنس کمیونٹی کے تمام ضروری فوائد کو بھی مدنظر رکھے گا،ایف پی سی سی آئی کا گوادر ریجنل آفس گوادر شہر ٹریڈ اور انرجی، ٹرانسپورٹ حب کے حوالے سے بزنس کمیونٹی کی اس بندرگاہ شہر میں موثر انداز خدمت کے لیے تیار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریجنل آفس کے قیام سے اس بندرگاہ سے فوائد اٹھانے کی نئی راہیں نکلے گی جو بندرگاہ کی حد تک محدود نہیں رہے گی بلکہ ٹرانسپورٹ ،کینٹر کارگو اور دیگر فوائد سے ٹریڈ سینٹرل الشین ری پبلک اور افغانستان جن کی کوئی بندرگاہ نہیں ہے وہ بھی اور مغربی چا ئنا تک کاروبار ی افراد فائدہ اٹھا سکیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ