توہین عدالت کی درخواستوں پر احسن اقبال کا معافی نامہ قبول

66

لاہور (نمائندہ جسارت) لاہور ہائی کورٹ نے سابق وزیر داخلہ احسن اقبال کے خلاف توہین عدالت کی درخواستوں پر ان کا معافی نامہ قبول کرلیا۔ عدالت نے احسن اقبال کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم کردی ۔ جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں3 رکنی بینچ نے سماعت کی۔ احسن اقبال اپنے وکیل کے ہمراہ عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے ریمارکس دیے کہ احسن اقبال آپ پڑھے لکھے ہیں‘ آپ کو ملک کی خدمت کرنی چاہیے ‘ احسن اقبال آپ کا رویہ عدالتوں کے بارے میں ایسا رویہ نہیں ہونا چاہیے‘ عدالتوں نے قانون کے مطابق فیصلہ کرنا ہے کسی سے رنجش پر نہیں‘ آپ موجودہ حکومت کو مخالف نہ سمجھیں، ان کی مدد کریں‘ اداروں کو مضبوط کریں تاکہ پاکستان مضبوط ہو‘ اگر دوبارہ ایسا کیا تو عدالت از خود نوٹس بھی لے سکتی ہے‘ لوگ آتے جاتے رہتے ہیں لیکن اداروں نے رہنا ہے ان کو کمزور نہ کریں۔ بعد ازاں احسن اقبال نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کا احترام کرتا ہوں، عدلیہ اور تمام اداروں کو مل کر چلنا ہو گا‘ بڑے ڈیموں کی تعمیر بین الاقوامی فنانسنگ کے بغیر ممکن نہیں‘ ہم نے بڑے بڑے منصوبے چندے کے بغیر مکمل کیے‘ حکومت بیرون ملک پاکستانیوں سے چندہ ضرور مانگے مگر بھاشا ڈیم کی تعمیر کے لیے سنجیدہ اقدام کرے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک بند ہونے کی باتیں تشویشناک ہیں‘ سی پیک گیم چینجر ہے جسے کسی صورت بند نہیں ہونے دیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ